تعلیم ملکی معیشت کا ستون‘ ہر شہری کا بنیادی حق ہے‘ چیف جسٹس

17 اپریل 2018

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کوٹ میں،چیف جسٹس مےاں ثاقب نثار کی سربراہی میں تعلیمی اصلاحات کے حوالے سے اجلاس کانعقاد کیا گیا۔ چیف جسٹس نے شرکاءسے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بہتر تعلیم ملک کے ہر شہری کا بنےادی حق ہے جو اسے آئین پاکستان کا آرٹیکل 25Aدیتا ہے ،تعلیم کسی بھی ملک کی معیشت کی ترقی میں بنےادی ستون کا کردار ادا کرتی ہے،جب تک تعلیمی اداروں میں رےاست کی جانب سے بہتر تعلیم کے لیئے توجہ نہیں دی جائے گی اس وقت تک کوئی بھی ملک ترقی و کامےابی حاصل نہیں کرسکتا ،بطور رےاست کے فردیہ ہر ایک شہری کا بنےادی حق ہے،بطور اعلیٰ عدلیہ یہ ہماری آئینی ذمہ داری ہے کہ عوام کے اس بنےادی حق کی فراہمی کویقینی بنائیں،لہذا پورے ملک میں اس بات کو یقینی بناےاجائے گا کہ شہریوں کو معےاری تعلیم دی جائے اس حوالے سے ہر ممکن اقدامات اٹھائے جائیں گے، چیف جسٹس نے وفاقی محتسب طاہر شہباز کی سربراہی میں کمیٹی بنانے سے متعلق نام اور ٹرم آف ریفرنسز( TOR) طلب کر لیے ہیں کہ کس طرح ملک بھر میں مزید بہتر اور معےاری تعلیم کی فراہمی کا بندوبست کےا جاسکتا ہے، چیف جسٹس نے اس حوالے سے شرکا ءسے تجاویز اور سفارشات طلب کرلی ہیں، چیف جسٹس نے ہدایت جاری کی ہے کہ تعلیمی اصلاحات کا ٹاسک مکمل ہونے تک وفاقی سیکرٹری کیبنٹ ، تمام صوبائی سیکرٹریز ، سیکرٹریز تعلیم ، دیگر متعلقہ آفسیرز بنائے جانے والی کمیٹی کا حصہ ہوں گے ،چیف جسٹس اور شرکا کے درمےان معاملے، مسائل، تعلیمی نظام کی بہتری سے متعلق تبادلہ خےال کےا گےا ۔ اجلاس میں وفاقی محتسب طاہر شہباز، ڈاکٹر مختار احمد سابق چیئرمین ایچ ای سی،وفاقی سیکٹریز آف کیڈ، وفاقی وصوبائی سیکرٹریز آف ایجوکیشن، سیکٹریز جی بی، اے جے کے نے شرکت کی۔
چیف جسٹس/ خطاب