امسال ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں کی تعداد 175 تک پہنچ جائے گی: عرفان کھوکھر

17 اپریل 2018

لاہور(نیوز رپورٹر) چیئرمین ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن پاکستان فائونڈر ایل پی جی انڈسٹریز ایسوسی ایشن آف پاکستان (ایل پی جی چیمبر آف پاکستان) عرفان کھوکھر نے غیر معیاری سلنڈروں سے ہونے والے دھماکے روکنے اور غریب صارفین کو ایل پی جی کی بلا تعطل سپلائی کو برقرار رکھنے کیلئے وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو سمری بھجوا دی۔ عرفان کھوکھر نے بتایا کہ اس وقت پاکستان میں 157ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیاں موجود ہیں جو کہ 2018میں 175تک پہنچ جائیں گی۔ صرف 30سے 35 کمپنیوں کے پاس لوکل ایل پی جی کوٹہ موجود ہے جبکہ باقی تمام کمپنیاں مکمل طور پر درآمدی ایل پی جی پر گزارہ کر رہی ہیں۔حکومت ایل پی جی کی لوکل پیداوار تمام 157ایل پی جی مارکیٹکنگ کمپنیوں کو میرٹ کی بنیاد پر مساوی تقسیم کرے بشرطیہ تمام ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیاں لوکل کوٹے کے کم از کم 50 فیصددرآمدی ایل پی جی شامل کر کے ایک قیمت جاری کریں۔ بلا تعطل ایل پی جی کی سپلائی کیلئے ایل پی جی درآمد کو فیزیبل کرنا ہوگا، لوکل پیداواری ایل پی جی اور درآمدی ایل پی جی کی قیمتوں میں موجود فرق کو ختم کرنے کیلئے لوکل ایل پی جی پر لگے لیوی ٹیکس، درآمد پرلگے 5.5% ایڈوانس ٹیکس، ریگولیٹری ڈیوٹی اور دیگر ٹیکس مکمل ختم کر دیے جائیں۔