رہائش گاہیں واپس لینے کیخلاف 33 ججوں نے نوٹی فیکیشن چیلنج کردیا

17 اپریل 2018

اسلام آباد(نمائندہ نوائے وقت) ہائیکورٹ اور ماتحت عدالتوں کے ججوں سے سرکاری رہائش گاہیں واپس لینے کے خلاف ڈسٹرکٹ کورٹس کے 33 ججوں نے نوٹیفکیشن کو اسلام آباد ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا ہے ۔پیر کو دائر کردہ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ سرکاری رہائش گاہیں قانون کے مطابق ملی ہیں کرایہ بھی ادا کر رہے ہیں،جب تک درخواست کا فیصلہ نہیں ہو جاتا عدالت تب تک نوٹیفکیشن کو معطل کیا جائے ۔دائر درخواست میں وفاقی حکومت،سیکرٹری ہاو؟سنگ، سیکشن آفیسر اور سٹیٹ آفیسر کو فریق بنایا گیا ہے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...