30 نومبر کو کوئی بھی آؤٹ ہوسکتا ہے‘ نوازشریف کارڈ احتیاط سے کھیلیں: منور حسن

16 نومبر 2014

 کراچی (آئی این پی) جماعت اسلامی کے سابق امیر سید منور حسن نے کہا ہے کہ 30 نومبر کوکوئی بھی آئوٹ ہوسکتا ہے۔ میاں صاحب اپنے کارڈز ٹھیک سے کھیلیں‘ غیروں کو اپنا رہے ہیں اپنے ان سے دور ہو رہے ہیں‘ یہاں کرپشن کے سوا داعش کی چاکنگ سمیت سب نقلی ہے۔ کراچی پریس کلب کے دورے کے موقع پر صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دھرنوں کو برا بھلا نہیں کہہ سکتا کیونکہ یہ جمہوریت کا حصہ ہیں، مگر انکی آڑ میں قانون کو ہاتھ میں نہ لیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان کو سلام پیش کرتا ہوں انہوں نے بہت سارے مسائل پر قوم میں بیداری کی لہر پیدا کی۔ انہوں نے کہا کہ 30 نومبر کے بارے میں کچھ نہیں کہ سکتا۔ وزیراعظم کے پاس اب بھی وقت ہے۔ فیصلہ سازی کا عمل شروع کریں، امیدوں اور توقعات کو پورا کریں۔ پاکستان کو برا بھلا کہنے والے سن لیں 4 مارشل لا کے بعد بھی پاکستان قائم ہے، 4 مارشل لا ایڈمنسٹریٹرز کے بعد جمہورریت نہیں آتی۔ افغانستان کے خراب حالات کے نتیجے میں پاکستان متاثر ہورہا ہے، قائداعظمؒ نے اسی لئے مغربی سرحد پر فوج تعینات کرنے سے منع کیا۔ افغانستان کے معاملے پر ملاقاتیں ہو رہی ہیں لیکن ان ملاقاتو ںمیں ضرور کوئی گھپلا ہے۔ ہمیں افغانستان کو محرومی سے بچانا ہو گا۔