پاکستان میں 30 ہزار شوگر اسپیشلسٹ کی فوری ضرورت ہے: ڈاکٹر عارف

16 نومبر 2014

لاہور (پ ر) پاکستان کے معروف  شوگر اسپیشلسٹ  پروفیسر ڈاکٹر عارف ریاض نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان میں شوگر  کا مرض جس رفتار سے بڑھ رہا ہے اس کی روک تھام کے لئے ضروری ہے  کہ سرکاری ہسپتال میں شوگر اسپیلسٹ  کی چیئربنائی جائے۔ پاکستان اس وقت شوگر کے مرض میں پانچویں نمبر پر ہے۔ انہوں نے یہ بات شوگر  کے عالمی دن کے حوالہ سے انور ریاض قدیر ڈائبٹیز انسٹیٹیوٹ  میں منعقدہ ایک فری شوگر کیمپ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا  کہ  اگر اس مرض کا بروقت علاج شروع  کر دیا جائے۔  تو اس کی پیچیدگیوں سے بچا جا سکتا ہے۔  20 سال کی عمر کے بعد سال میں ایک دفعہ شوگر ضرور چیک کرانی چاہئے۔  جس تیزی سے یہ مرض بڑھ رہا ہے۔ پاکستان میں تقریباً 30 ہزار شوگر اسپیشلسٹ  کی فوری ضرورت  ہے۔