مقبوضہ کشمیر : دو نوجوانوں کی نعشیں حوالے کرنے کیلئے مظاہرہ‘ فوج کی فائرنگ‘ متعدد زخمی‘ علی گیلانی میرواعظ نظربند

16 نومبر 2014

سرینگر (اے پی پی+کے پی آئی) مقبوضہ کشمیر میں قابض انتظامیہ نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق ، بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی اور دیگر حریت رہنماﺅں کو گھروں اور تھانوںمیں غیرقانونی طور پر نظربند کر دیا ہے۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق میرواعظ عمر فاروق ، سیدعلی گیلانی اور شاہد الاسلام کو سرینگر میں گھروں میں نظر بند کیا گیا۔ بھارتی پولیس نے کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنما ہلال احمد وار کو گرفتار کر کے سرینگر کے مائسمہ تھانے میں نظر بند کر دیا۔ شمالی کشمیر میں تحصیل ہندواڑہ سے 18کلو میٹر دور لاچھ ماور میں ایک مشکوک گرنیڈ دھماکہ میں ایک نوجوان جاں بحق جبکہ ایک اہلکار زخمی ہوا ہے۔ ہندواڑہ کے لاچھ ماور میں جمعہ کی دوپہر ایک مشکوک گریینڈ دھماکہ ہوا جسکے نتیجے میں آ س پاس کا علاقہ لرز اٹھا ۔مقامی لوگو ں کے مطابق ایک سراغ رساں ادارے سے وابستہ 2 اہلکار جوایک مو ٹر سائیکل پر سوار تھے ،نے ایک نو جوان ظہور احمد نجار ولد غلام قادر نجار کو لاچھ جنگل میں بلایا ۔مقامی لو گو ں کے مطابق اس دوران ایک زور دار دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں ظہور احمد اور سراغرساں ادارے سے وابستہ دونوں اہلکار زخمی ہوئے۔کولگام میں فوج کے ہاتھوں شہےد ہونے والے دو افراد کی نعشیں مانگنے کے لئے مظاہرہ کرنے والے افراد پر نیم فوجی اہلکاروں کی فائرنگ سے کئی نوجوان زخمی ہو گئے۔ صبح کولگام میں فوج نے دعوی کیا تھا کہ طویل مسلح تصادم کے بعد دو شدت پسندوں عباس ملاح اور منظور ملک کو شہےد کر دےا گےا ہے۔