گیس لوڈشیڈنگ کیخلاف مظاہرے

16 نومبر 2014
گیس لوڈشیڈنگ کیخلاف مظاہرے

سوئی گیس کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کیخلاف لاہور میں احتجاجی مظاہرہ، ٹریفک بلاک کر دی گئی۔ گوجرانوالہ میں محکمہ سوئی گیس آفس پر پتھراﺅ کیا گیا اور حکومت مخالف نعرے بھی لگائے گئے۔
جوں جوں سردی قریب آ رہی ہے اس تناسب سے سوئی گیس کی مانگ بڑھ رہی ہے حکومت نے ماضی میں سوئی گیس کے نئے ذخائر تلاش کرنے کی کوشش کی نہ ہی ایران کی طرف سے گیس حاصل کرنے کیلئے کوئی سنجیدہ جدوجہد نظر آئی۔ گیس کی کمی کے باوجود حکومت نے ماضی میں گاڑیوں کو سی این جی پر شفٹ کرنے کیلئے مہم چلائی لیکن گیس کی عدم دستیابی کے باعث اب سارے سی این جی سٹیشن بند پڑے ہیں۔ موسم سرما میں گیس کی مانگ بڑھ جاتی ہے گھروں میں چولہے نہیں جل رہے۔ بچے کھانے کیلئے تڑپ رہے ہیں لیکن گیس دستیاب نہیں۔ ایک غریب مزدور ہر روز ہوٹل سے کھانا نہیں کھا سکتا۔ حکومت غیر اعلانیہ گیس لوڈشیڈنگ سے اجتناب کرے اور گیس کے نئے ذخائر تلاش کرے۔ کینیڈین کمپنی ”جیورا“ نے بدین میں گیس کے نئے ذخائر دریافت کئے ہیں جن سے 11 کروڑ مکعب فٹ گیس حاصل ہو گی۔اطالوی انرجی گروپ نے کراچی سے 350 کلو میٹر دور کھیرتر فولڈ بیلٹ ریجن میں گیس کے ذخائر دریافت کئے ہیں۔ یہ ذخائر 300 سے 400 بلین فٹ ہیں۔ اسی طرح میال سے بھی ذخائر دریافت ہوئے ہیں جہاں سے روزانہ سو بیرل تیل اور چالیس لاکھ کیوبک گیس روزانہ حاصل کی جا سکتی ہے۔ حکومت ان ذخائر کو استعمال کے قابل بنا کر عوام کی مشکلات دور کرے اور عوام کو انرجی بحران سے نجات دلوانے کیلئے مزید نئے ذخائر دریافت کئے جائیں تاکہ عوام کی ضروریات پوری ہو سکیں۔ اس وقت تک گیس قلت اور فراہمی کو بلاامتیاز تمام صارفین پر تقسیم کر دیا جائے۔

روحانی شادی....

شادی کام ہی روحانی ہے لیکن چھپن چھپائی نے اسے بدنامی بنا دیا ہے۔ مرد جب چاہے ...