حکومت، اپوزیشن میں جنگ آج فیصلہ کن مرحلہ میں داخل ہو گی

16 مئی 2016

اسلام آباد (محمد نواز رضا / وقائع نگار خصوصی) پانامہ لیکس پر حکومت اور اپوزیشن کے درمیان ”جنگ“ آج پارلیمنٹ میں فیصلہ کن مرحلے میں داخل ہو جائے گی۔ جنگ کی شدت میں کمی آ جائے گی، حکومت اور اپوزیشن پانامہ لیکس کا کوئی ”پارلیمانی حل“ تلاش کرنے کیلئے مذاکرات کی میز پر بیٹھنے پر مجبور ہو جائیں گی۔ وزیراعظم محمد نواز شریف آج پانامہ لیکس کی کوکھ سے جنم لینے والے ”سیاسی طوفان“ کے سامنے بند باندھنے کی کوشش کریں گے۔ وزیراعظم محمد نواز شریف نے قومی اسمبلی میں خطاب کیلئے تقریر تیار کر لی ہے۔ تاہم اس بات کا قوی امکان ہے کہ وہ فی البدیہہ خطاب کریں گے۔ قومی اسمبلی میں وزیراعظم کے خطاب کے بعد سپیکر سردار ایاز صادق قواعد کو معطل کرکے اپوزیشن جماعتوں کے قائدین کو نکتہ نظر پیش کرنے کا موقع دے کر ایوان کا ماحول پرسکون رکھنے کی کوشش کریں گے۔ قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے سپیکر قومی اسمبلی کو ایوان کا ماحول پرامن رکھنے کیلئے اپوزیشن کو بات کرنے کا موقع دینے کی درمیانی راہ دکھائی ہے جسے سپیکر نے قبول کر لیا۔ قومی اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن کے رہنماﺅں کی تقاریر کا جواب وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خان دیں گے۔ اپوزیشن لیڈر سید خورشید شاہ نے یقین دہانی کرائی ہے کہ وہ اپوزیشن کی دیگر جماعتوں کے ارکان کو ہنگامہ آرائی نہیں کرنے دیں گے۔
حکومت اپوزیشن جنگ