پاکستان کیساتھ غلط فہمیاں دور نہیں ہوئیں‘ طالبان سے مذاکرات کا اگلا دور نتیخہ خیز ہو گا : افغان سفیر

16 مئی 2016

اسلام آباد (جاوید صدیق) پاکستان میں افغانستان کے سفیر حضرت عمر زاخیل خلیل نے کہا ہے پاکستان اور افغانستان کے درمیان تمام تر کوششوں کے باوجود غلط فہمیاں دور نہیں ہو سکیں، لیکن ہمیں ان کوششوں کو جاری رکھنا ہو گا۔ وقت نیوز کے پروگرام ”ایمبیسی روڈ میں“ انٹرویو دیتے ہوئے انہوں نے کہا افغانستان کو معلوم نہیں طالبان کا ایک وفد حال ہی میں کراچی کیوں آیا۔ کس سے ملا ہمیں اس بارے میں کوئی اطلاع نہیں دی گئی۔ اس سے دونوں ملکوں میں غلط فہمیاں پیدا ہوئی ہیں۔ اس سوال کے جواب میں کہ پاکستان کے پالیسی سازوں کو اس بات پر تشویش ہے بھارت کا افغانستان میں اثرورسوخ بڑھ رہا ہے تو افغان سفیر نے تفصیلی جواب دیتے ہوئے کہا پاکستان کو افغانستان کے ساتھ اپنے مراسم کو بھارت کے حوالے سے نہیں دیکھنا چاہئے۔ ہمارے بھارت کے ساتھ آزادانہ تعلقات ہیں اور پاکستان کے ساتھ ہمارے تعلقات بالکل الگ ہیں۔ پاکستان کے ساتھ ہماری سرحدیں مشترک ہیں ہم جغرافیائی، ثقافتی اور عقائد کے اعتبار سے ایک دوسرے کے قریب ہیں۔ انہوں نے اس بات کی تردید کی افغانستان میں بھارت کے 16قونصل خانے ہیں۔ انہوں نے کہا پچھلے پچاس برس میں افغانستان میں بھارت کے صرف 4 قونصل خانے ہیں جبکہ پاکستان میں تصور ہے وہاں سولہ قونصلیٹ کام کر رہے ہیں اس طرح کے کئی اور تصورات پاکستان اور افغانستان میں بدگمانیاں پیدا کر رہے ہیں۔ افغان سفیر نے کہا پاکستان کی یہ تشویش بجا ہے افغانستان کی سرزمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہونی چاہئے لیکن بھارت سے ہمارے تعلقات آزادانہ طور پر ہیں ان سے پوچھا گیا پاکستان کے وزیراعظم نوازشریف نے افغانستان کا دورہ کیا اور صدر اشرف غنی نے پاکستان کا دورہ کیا ہمارے ملٹری سربراہ بھی ملاقاتیں کر چکے ہیں لیکن بدگمانیاں ختم نہیں ہو رہیں تو افغان سفیر نے کہا اس میں شک نہیں یہ ملاقاتیں ہوئی ہیں یہ درست ہے دونوں ملکوں میں تعاون ہوا ہے۔ آرمی پبلک سکول پشاور پرحملے میں ملوث افراد کو افغانستان نے پاکستان کے حوالے کیا۔ پاکستان نے شمالی اور جنوبی وزیرستان میں طالبان کے خلاف آپریشن کیا ہے لیکن حقانی نیٹ ورک کے خلاف موثر آپریشن نہیں ہوا۔ افغان حکومت اور طالبان میں مذاکرات کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں افغان سفیر نے کہا چار فریقی مذاکرات میں طالبان نے جو وعدے کئے تھے وہ پورے نہیں ہوئے۔ افغان سفیر نے توقع ظاہر کی افغان حکومت اور طالبان کے درمیان اگلا دور مثبت اور نتیجہ خیز ہوگا۔ پاکستان افغان تجارت کے بارے میں سوال پر افغان سفیر نے کہا تجارت مشکلات کا شکار ہے گزشتہ دس برس سے پاکستان اور افغانستان میں تجارت 2 ارب ڈالر سے آگے نہیں بڑھ سکی جبکہ اس عرصہ میں ایران اور افغانستان کی تجارت 100 ملین ڈالر سے بڑھ 5 ارب ڈالر سے زیادہ ہو چکی ہے۔
افغان سفیر

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...