ایف 16 طیاروں کو جدید بنانے کا ترکی سے معاہدہ

16 مئی 2016

ترکی اور پاکستان کے درمیان ایف 16 طیاروں کو جدید بنانے کا معاہدہ طے پا گیا ہے۔ ترک ریجنل کوآرڈینیٹر برائے فارن اکنامک فورم والکن بورڈ نے میڈیا کو بتایا کہ ایف 16 طیاروں کو جدید بنانے کا معاہدہ ساڑھے 7 کروڑ ڈالر میں طے پایا ہے۔
پاکستان امریکہ سے 80 کی دہائی سے ایف سولہ طیارے حاصل کر رہا ہے۔ جس کے بعد پاکستان کا دفاع مضبوط ہوا ہے۔ ایف 16 طیارے حاصل کرنے کے بعد پاکستان نے چین کی مدد سے تھنڈر طیارے بنائے ہیں جس کی دنیا بھر میں مانگ بھی ہے اور پاکستان دھڑا دھڑ طیارے بنا کر فروخت بھی کر رہا ہے لیکن سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ پاکستان ابھی تک ایف 16 طیاروں کو خود اپ گریڈ کرنے کے قابل کیوں نہیں ہوا؟ اب ترکی کے ساتھ ایف 16 طیاروں کی اپ گریڈیشن کیلئے معاہدہ کیا ہے جبکہ اس سے قبل امریکہ کی ایک کمپنی کے ساتھ بھی پاکستان کے طیاروں کی اپ گریڈیشن کیلئے معاہدہ کیا گیا تھا۔ پاکستان کو طیاروں کی اپ گریڈیشن کیلئے دوسروں پر انحصار چھوڑ کر اب خود ان طیاروں کی مرمت اور انہیں جدید بنانے کی کوشش کرنی چاہئے۔ ہمارے سائنسدان جب نئے طیارے بنا سکتے ہیں تو پھر 16 ایف طیاروں کو اپ گریڈ کرنا ان کیلئے کون سا مسئلہ ہو گا۔ اب تو ایف 16 طیاروں کا جدید ترین ماڈل ایف 16 بلاک 52 بھی آ چکا ہے۔ پاکستان کو اپنے دفاع کیلئے ایسے طیارے حاصل کر کے خطے میں اپنی فضائی برتری کو برقرار رکھنا چاہئے۔