کشمیری مسلمانوں نے رواداری کی نئی مثال قائم کردی، ہندو پنڈت کی آخری رسومات کا انتظام کیا، چتا بھی جلائی

16 مئی 2016

سرینگر/ نئی دہلی (آئی این پی) کشمیری مسلمانوں نے ایک بار پھر مذہبی ہم آہنگی، اخوت اور انسانیت نوازی کی عمدہ مثال قائم کرتے ہوئے مقامی کشمیری پنڈت اوتار کرشن کی آخری رسومات سرانجام دیں۔ بھارتی میڈیا کے مطابق وسطی کشمیر کے ضلع گاندربل کے کولن گنڈ گائوں کا رہائشی اوتار کرشن ہفتہ کے روز طویل علالت کے بعد انتقال کرگیا جس کے بعدان کے پڑوسی کشمیری مسلمانوں نے نہ صرف کرشن کی آخری رسومات سرانجام دیں بلکہ ان کی ارتھی کو اپنے کندھوں پر اٹھانے کے علاوہ چتا کو آگ لگانے کے لئے درکار لکڑی اور دوسری چیزیں مہیا کیں۔اوتار کرشن کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ 1990ء کی دہائی میں جب بیشتر کشمیری پنڈت وادی چھوڑ کر چلے گئے تو انہوں نے یہاں ہی اپنے مسلمان بھائیوں کے ساتھ رہنے کو ترجیح دی۔