اقتدار پھولوں کی نہیں‘ کانٹوں کی سیج ہے وزیر اعلیٰ کی ڈاکٹروں سے گفتگو، میرٹ پالیسی کی وجہ سے مرحوم بھائی کے پوتوں کو بھی ایچی سن کالج داخلے کی اجازت نہیں دی

16 مئی 2016

لاہور(خبر نگار) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف اور ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے وفد کے مابین ملاقات ساڑھے تین گھنٹے تک جاری رہی۔ ینگ ڈاکٹرز کے نمائندوں نے ہسپتالوں میں طبی سہولتوں کی بہتری اور اپنے مسائل کے حوالے سے تجاویز دیں جبکہ سینئر ڈاکٹرز نے بھی شعبہ طب میں بہتری لانے کے حوالے سے سفارشات پیش کیں۔ وزیراعلیٰ نے انتہائی انہماک سے تجاویز سنیں اور نوٹ کیں۔ وزیراعلیٰ نے اپنے کلیدی خطاب میں کہا کہ آپ سب بلاتکلف اظہار خیال کریں، یہی آج کی نشست کا تقاضا ہے کیونکہ جھوٹ کو چھپایا اور سچ کو دبایا نہیں جا سکتا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں 8 برس سے صوبے کے عوام کی خدمت کر رہا ہوں۔ یہ اقتدار پھولوں کی نہیں بلکہ کانٹوں کی سیج ہے۔ اگر کہیں وینٹی لیٹر بھی خراب ہو جائے تو ضمیر مجھے جھنجھوڑتا ہے اور مجھے نیند نہیں آتی۔ وزیراعلیٰ نے میرٹ کی بالادستی کو یقینی بنانے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ایچی سن کالج میں جہاں امراء اور جاگیرداروں کے بچے پڑھتے ہیں وہاں میرٹ کو یقینی بنانے کے حوالے سے میں نے گورنر پنجاب کو خط لکھا لیکن کئی تمن دار عدالت چلے گئے۔ عدالت میں ان کا موقف مسترد ہوا۔ میں اسلام آباد تھا تو مجھے فون پر کسی نے بتایا کہ آپکی اس میرٹ پالیسی کے باعث آپکے مرحوم بھائی کے پوتے بھی داخل نہیں ہوسکیں گے، صرف پانچ داخلوں کی اجازت دیدیں۔ وزیراعلیٰ اپنے مرحوم بھائی کا ذکر کرتے ہوئے اشکبار ہو گئے اور کہا کہ بھائی کو میں خود اللہ کے ہاں جواب دوں گا لیکن میرٹ پالیسی کی کسی صورت خلاف ورزی نہیں ہونے دوں گا۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...