پیپلز پارٹی پنجاب کا خزانہ خالی‘ سابق سیکرٹری نے آرگنائزنگ کمیٹی کو جواب دیدیا

16 مئی 2016

لاہور (سید شعیب الدین سے) پاکستان کی سب سے بڑی جماعت پیپلز پارٹی کی سب سے بڑے صوبے کی تنظیم کا ’’خزانہ‘‘ خالی نکلا۔ پنجاب تنظیم کے سابق سیکرٹری خزانہ نے آرگنائزنگ کمیٹی کے استفسار پر انہیں صاف جواب دیدیا کہ انہیں نہ پارٹی نے کچھ دیا نہ عہدیداروں نے‘ صرف چند عہدیداروں نے جو سالانہ فیس جمع کرائی اسکا حساب لے لیں۔ پارٹی کی اعلیٰ قیادت کی طرف سے صوبے کو کتنی رقم ملی اور کہاں خرچ ہوئی اسکا کوئی حساب کتاب انکے پاس نہیں ہے۔ ذرائع کے مطابق پنجاب میں پارٹی تنظیم کو توڑنے کے بعد چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کی طرف سے بنائی گئی 5 رکنی آرگنائزنگ کمیٹی نے صوبائی تنظیم کے مالی معاملات چلانے کیلئے جب سابق سیکرٹری خزانہ اورنگزیب برکی سے رابطہ کیا تو انکا کہنا تھا انہیں تو کوئی پیسہ نہیں ملا۔ اس سوال پر کہ پھر صوبائی دفتر کے مالی معاملات کسے چلائے جاتے رہے۔ سیکرٹری خزانہ کا کہنا تھا صوبائی دفتر اعلیٰ قیادت کی بھیجی رقم سے خریدا گیا۔ اس پر ہر ماہ خرچ ہونے والی رقم کا انہیں علم ہی نہیں۔ آفس ملازمین کی تنخواہیں یوٹیلیٹی بلز‘ انٹرٹینمنٹ‘ تنظیم کے عہدیداروں کے صوبے بھر کے دوروں پر ہونے والے اخراجات کہاں سے ادا کئے جاتے رہے انہیں علم نہیں۔ اعلیٰ قیادت کی طرف سے پنجاب میں تنظیم چلانے کیلئے کتنی رقم بھجوائی گئی وہ لاعلم ہیں۔ جب اورنگزیب برکی سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے تصدیق کی انہوں نے آرگنائزنگ کمیٹی کو بنا دیا ہے انہیں کوئی پیسہ نہیں ملا۔ جو رقم ملی اس کا ہر سال آڈٹ ہوتا رہا ہے۔