حضرت خواجہ محمد شفیع نظامی رحمة اللہ علیہ

16 مارچ 2010
مکرمی! خواجہ محمد شفیع نظامی رحمة اللہ علیہ جہاں روحانی اعتبار سے بلند درجے پر فائز تھے وہاں علمی دنیا میں بھی ان کا مقام بہت ارفع و اعلیٰ تھا ۔چنانچہ جب وہ علمی نکات بیان کرتے تو معلوم ہوتا کہ ایک بحرناپید کنارہے جوٹھا ٹھیں ماررہا ہے ....حضرت خواجہ محمد شفیع نظامیؒ کا اس دنیائے فانی سے پردہ فرمانے کے بعد بھی ان کے فیضان عام کی داستانیں اسی طرح زبان زد عام ہیں جس طرح ان کی زندگی مبارک میں وطن عزیز کی دور دراز وادیوں میں گونج رہی تھیں۔ان کی روحانیت کے نور کے مشاہدہ کا نظارہ آنکھ والے آج بھی دربار شریف پر پوری آب و تاب سے کرتے ہیں۔ ان کے دربار عالیہ کی عظمت اور جلال کا نور کا نظارہ بالخصوص عرس مبارک کے دِنوںمیں اہل نظر کے دلوں کو جلا بخشتا ہے۔ قبلہ محمد شفیع نظامیؒ کی ظاہری زندگی مبارک میں بھی ہر روز عقیدت مندوں و مریدین کیلئے لنگر جاری و ساری رہتا تھا علاوہ ازیں ہر ہفتہ بعد نماز مغرب تا عشاءذکر و مراقبہ کی روحانی محفل کا اہتمام بڑے زور و شور سے کیا جاتا جس میں ذاکرین کو باقاعدہ دستر خوان سجا کر سنت کے مطابق مٹی کے برتنوں میں کھانا کھلایا جاتا ، اور یہی طریقہ ان کے حیات ظاہری سے پردہ فرمانے کے بعد بھی ان کے صاحبزادہ سجادہ نشین قبلہ شبیر احمد شفیعی کی زیر سرپرستی میں جاری و ساری ہے۔ ( جاوید احمد عابد شفیعی)