لاہور : ایڈمنسٹریٹر بھی شہر میں غیر قانونی تعمیرات نہ رکوا سکے

16 مارچ 2010
لاہور (خبر نگار) صوبائی دارالحکومت میں ایڈمنسٹریٹر مقرر کئے جانے کے باوجود غیر قانونی تعمیرات دھڑلے سے جاری ہیں۔ کچا لارنس روڈ پر نالے کو ڈھک کر اور اسے پارکنگ ایریا بنا کر نالے کے دوسری طرف دو سہ منزلہ عمارتیں تعمیر کی جا رہی ہیں۔ نکلسن روڈ پر ایک چار منزلہ عمارت مکمل کرکے اسے رنگ کرکے ”محفوظ“ بنایا گیا ہے۔ منٹگمری روڈ پر پرانی دکانوں کو تیزی سے تین اور چار منزلہ عمارتوں میں تبدیل کیا جا رہا ہے وسن پورہ‘ شاد باغ میں پرانی عمارتوں کو بیرونی دیوار مسمار کرنے کی بجائے ”پردہ‘ق استعمال کرکے عقب میں کمرشل تعمیر بھی کی جا رہی ہیں میکلوڈ روڈ پر گول چکر کے سامنے اور واسا کے دفتر کے بالمقابل پرانی عمارت کے آگے خالی چھوڑ گئی جگہ پر 3 منزلہ عمارت تعمیر کر لی گئی ہے سوئیکار نو بازار میں تیزی سے ایک منزلہ دکانوں کو تین اور چار منزلہ پلازوں میں تبدیل کیا جا رہا ہے لنڈا بازار میں ایک اور دو منزلہ پرانی بوسیدہ دکانوں کی جگہ چار چار منزلہ عمارتیں تعمیر کی جا رہی ہیں۔