کرایوں میں اضافہ‘ ٹرانسپورٹروں‘ طلبہ کا احتجاج‘ 6 بسیں نذر آتش‘ لاٹھی چارج‘ شیلنگ‘ پتھراﺅ‘ درجنوں زخمی

16 مارچ 2010
لاہور (نامہ نگار + مانیٹرنگ) کرایوں میں اضافہ اور ویگنوں کو بند کرنے کے خلاف ٹرانسپورٹروںطلبہ اور شہریوں نے مشترکہ احتجاجی مظاہرہ کیا اور فےروزپور روڈ پرجنرل ہسپتال کے قرےب مظاہرےن نے 6 بسوں کو آگ لگادی اور متعدد بسوں و پرائیویٹ گاڑیوں کے شیشے توڑ دیئے۔ پولیس کے لاٹھی چارج و آنسو گیس کی شیلنگ اور مظاہرےن کے پتھراو سے علاقہ مےدان جنگ بن گےا اور پولےس اہلکاروں سمےت درجنوں افراد زخمی ہو گئے جبکہ پولیس نے 18 مظاہرین کو گرفتار کر لیا ہے۔ مقامی تاجروں نے دکانیں بند کر دیں۔ تفصیلات کے مطابق فیروزپور روڈ پر پرائےوےٹ ویگنوں کے روٹ ختم کرنے پر گذشتہ روز ویگن مالکان‘ ڈرائیوروں اور کنڈکٹروں نے چونگی امرسدھو فیروز پور روڈ پر احتجاجی مظاہرہ شروع کر دیا۔ جس میں بس سٹاپوں پر کھڑے بہت سے طلبا اور شہری بھی شامل ہو گئے۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا کہ ویگن روٹ اور ٹو سٹروک رکشہ بحال کئے جائیں اور کرایوں میں اضافہ واپس لیا جائے۔ شہرےوں اور طلبا کا کہنا تھا کہ بسیں سٹاپ سے سٹاپ تک 15 روپے کرایہ وصول کر رہی ہیں جو ظلم و زےادتی ہے۔ مظاہرےن کے فیروز پور روڈ بلاک کرنے پر پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کی کوشش کی تو مظاہرین مشتعل ہو گئے اور انہوں نے بسوں اور گاڑیوں کے شیشے توڑ کر آگ لگانا شروع کر دی۔ بسوں کو آگ لگنے سے ہر طرف کالے دھوےں کے بادل چھا گئے۔ پولیس نے بھاری نفری طلب کر لی اور مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کیا۔ مظاہرین نے پولیس پر جوابی پتھراﺅ کیا اور علاقہ مےدان جنگ بن گےا۔ مظاہرین نے ایک ڈی ایس پی کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا اور اس پر مٹی کا تیل چھڑک کر آگ لگانے کی کوشش کی۔ ایک اے ایس آئی پر تشدد کر کے وردی پھاڑ دی گئی۔ متعدد بسوں و پرائیویٹ گاڑیوں کے شیشے توڑ دئیے گئے۔ کئی فےملےز بھی زخمی ہوئےں۔ لوگوں نے زخمےوں کو اپنی مدد آپ کے تحت مقامی ہسپتال پہنچاےا۔ پولیس نے 18 مظاہرین کو گرفتار کر لیا اور شدےد تشدد کرتے ہوئے تھانوں مےں بند کر دےا۔ فائربریگیڈ عملہ نے موقع پر پہنچ کر بسوں کو لگی آگ پر قابو پاےا لیکن اس وقت تک 6 بسیں مکمل طور پر جل چکی تھیں۔ مظاہرہ کی وجہ سے فیروز پور روڈ 3 گھنٹے سے زائد بند رہا اور گاڑےوں کی لمبی قطارےں لگ گئےں۔ مظاہرین نے کہا کہ اگر ویگن روٹ بحال اور کرایوں میں کمی نہ کی گئی تو احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔ پی پی آئی کے مطابق ٹرانسپورٹ فیڈریشن کی اپیل پر لاہور کے ٹریفک وارڈنز کی طرف سے ڈرائیوروں کے خلاف بے جا مقدمات‘ ناجائز تنگ کرنے اورر غیر اخلاقی رویے کے خلاف لاہور قصور وڈ پر چلنے والی ٹرانسپورٹ نے گذشتہ روز مکمل پہیہ جام ہڑتال کی جس کی وجہ سے لاہور سے قصور روڈ پر چلنے والی ٹرانسپورٹ نے گذشتہ روز مکمل پہیہ جام ہڑتال کی جس کی وجہ سے لاہور جانے والے مسافروں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔