صدر کا یوم پاکستان کے موقع پر قیدیوں کی سزاﺅں میں کمی کا اعلان

16 مارچ 2010
اسلام آباد (آن لائن) صدر آصف علی زرداری نے 23 مارچ یوم پاکستان کے موقع پر قیدیوں کی سزاﺅں میں کمی کا اعلان کر دیا ہے، عمر قید پانے والے قیدیوں کی سزاﺅں میں 90 روز جبکہ معمولی جرائم کے مرتکب قیدیوں کی سزاﺅں میں 45 روز کمی کی گئی ہے، سزاﺅں میں کمی کا اطلاق قتل ، بغاوت ،ریاست کے خلاف سرگرمیاں ،زنا ب باالجبر و ڈکیتی ، اغواءبرائے تاوان ،دہشت گردی کے مقدمات میں ملوث قیدیوں پر نہیں ہوگا، پیر کے روز وزارت داخلہ کی جانب سے جاری ہونے والے نوٹیفکیشن کے مطابق صدر زرداری نے23 مارچ کو یوم پاکستان کے حوالے سے قیدیوں کی سزاﺅں میں کمی کا اعلان کر دیا ہے ، صدر نے خصوصی اختیارات کے تحت وہ مرد قیدی جو 65 سال اور عورت60 سال کی عمر کو پہنچ چکے ہیں اور ایک تہائی حصہ قید کی سزا کاٹ چکے ہیں ان کی بھتہ سزاﺅں میں معافی کا اعلان کیا ہے اور اس معافی کا اطلاق ان مقدمات پر نہیں ہو گا جو ملک میں دہشت گردی کے واقعات میں ملوث ہورہے ہیں ، صدر نے وہ نوجوان جن کی عمر اٹھارہ سال ہے اور وہ اپنی سزا کا ایک تہائی حصہ قید کاٹ چکے ہیں ان کی باقی تمام سزا معاف کرنے کا اعلان کیا ہے جبکہ ان کے مقدمات پر اس کا طلاق نہیں ہوگا جو دہشت گردی ، زنا با الجبر اغواءبرائے تاوان، ڈکیتی اور ملک دشمن سرگرمیوں میں ملوث مقدمات کے تحت قید ہیں۔