پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں رونما ہونیوالی مندی کا تسلسل کاروباری ہفتہ کے آغاز پر بھی برقرار

16 اپریل 2018 (21:35)

  پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں رونما ہونیوالی مندی کا تسلسل کاروباری ہفتہ کے آغاز پر بھی برقرار رہا ،ٹریڈنگ کے دوران کاروباری مندی کے سبب کے ایس ای100انڈیکس300سے زائد پوائنٹس گھٹ گیا اور انڈیکس 46ہزار پوائنٹس کی سطح سے کم ہو کر45600پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا ، مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے85ارب روپے ڈوب گئے جس کی وجہ سے سرمائے کا مجموعی حجم 94کھرب روپے سے کم ہو کر93کھر روپے رہ گیا ۔ مارکیٹ پیر کو کاروبار کے آغاز سے ہی مندی کا شکار رہی ،سیاسی افق پر چھائی غیر یقینی صورتحال کے باعث مقامی انسٹی ٹیوشنز اور بروکریج ہائوسز کیساتھ غیر ملکی سرمایہ کاروں نے بھی مارکیٹ سے سرمایہ نکالنے میں ہی عافیت جانی جس کی وجہ سے مارکیٹ منفی زون میں داخل ہو گئی اور مندی کا یہ رجحان کاروبار کے اختتام کر غالب دیکھا گیا ۔تجزیہ کاروں کے مطابق سرمایہ کار مارکیٹ میں دلچسپی نہیں لے رہے اور کسی بڑے نقصان سے بچنے کیلئے فروخت کو ترجیح دے رہے ہیں جس کے سبب مارکیٹ تنزلی کا شکار دکھائی دے رہی ہے۔ پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں پیر کو کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس میں389.62پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے انڈیکس 46071.86پوائنٹس سے کم ہو کر45682.24پوائنٹس ہو گیا اسی طرح کے ایس ای 30انڈیکس 263.70پوائنٹس کی کمی سے22767.47پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس33096.87پوائنٹس سے گھٹ کر32799.01پوائنٹس ہو گیا۔ مارکیٹ میںپیر کو مجموعی طور پر 14 کروڑ 48 لاکھ 46 ہزار 380 حصص کا کاروبار ہوا جبکہ جمعہ 19کروڑ73لاکھ85ہزار سے زائد شیئرز کے سودے ہوئے تھے  ۔ اسٹاک مارکیٹ میں پیرکو مجموعی طور پر374کمپنیوں کا کاروبار ہوا جس میں سے 106کمپنیوں کے حصص کی قیمتو ں میں اضافہ ،250میں کمی اور18کمپنیوں کے حصص کی قیمتوں میں استحکام رہا ۔ کاروباری مندی کے سبب مارکیٹ کا مجموعی سرمایہ 85 ارب 8 کروڑ 62 لاکھ43ہزار901روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم94کھرب43ارب18کروڑ21لاکھ56ہز ار637روپے سے کم ہو کر 93کھرب58ارب9کروڑ59لاکھ12ہزار73 6روپے ہو گیا۔سب سے زیادہ تیزی کالگیٹ پام اولیو کے حصص کی قیمت میں ہوئی جس کے حصص کی قیمت 134 روپے کے اضافے سے 3034 روپے پر بند ہوئی۔ اسی طرح ماری پیٹرولیم ایکس ڈی کے حصص کی سودے بھی 18.37 روپے کی تیزی سے 1536.01 روپے پر بند ہوئے۔ سب سے زیادہ مندی رفحان میز پروڈکٹس ایکس ڈی اور باٹا (پاک) ایکس ڈی کے حصص کی قیمتوں میں ہوئی۔ رفحان میز پروڈکٹس ایکس ڈی کے حصص کی قیمت 300 روپے کی مندی سے 8100 روپے اور باٹا (پاک) ایکس ڈی کے حصص کی قیمت بھی 47.50 روپے کی کمی سے 2745 روپے رہ گئی۔ سب سے زیادہ کاروبار یونیٹی فوڈز لمیٹڈ کے حصص میں ہوا جو 1 کروڑ 20 لاکھ 35 ہزار شیئرز رہا جس کی قیمت 26.72 روپے سے شروع ہو کر 28.01 روپے پر بند ہوئی جبکہ کے الیکٹرک لمیٹڈ کے 1 کروڑ 2 لاکھ 71 ہزار 500 حصص کے سودے 7.15 روپے سے شروع ہو کر 7.04 روپے پر بند ہوئے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...