فیڈریشن برائے وفاقی ملازمین کا 17 اپریل تک مطالبات کی عدم منظوری پر احتجاج کا اعلان

16 اپریل 2018

اسلام آباد(شاہد اجمل)فیڈریشن برائے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز نے وفاقی حکومت کو اپنے مطالبات کی منظوری کے لیے 17اپریل تک کی ڈیڈ لائن دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ہمارے مطالبات نہ مانے گئے تو 18اپریل کو پارلیمنٹ کے سامنے ایپکا کے ساتھ مل کر مشترکہ احتجاج کیا جائے گا،فیڈریشن نے مطالبہ کیا ہے کہ وفاقی سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 100فیصد اضافہ کیا جائے،فوری طور پر ملازمین کو پلاٹ الاٹ کیے جائیں ورنہ وزارت ہائوسنگ وتعمیرات اور ہائوسنگ فائونڈیشن کا گھیرائو کریں گے،ڈیل ویجز ملازمین کی ایک سال کی تنخواہیں فوری طورپر اداکی جائیں اور انہیں مستقل کیا جائے،ملازمتوں میں صوبوں کی طرح ملازمین کے بچوں کا کوٹہ مختص کیا جائے،تمام ایڈہاک ریلیف الائونسز کو بنیادی تنخواہ کا حصہ بنایا جائے،پاکستان پوسٹ کے تمام ملازمین کی فوری طور پر اپ گریڈیشن کی جائے۔ان خیالات کا اظہارفیڈریشن برائے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائزکے چیئرمین چوہدری مختیار ،میڈیا کوارڈینیٹر ضیاء خان یوسفزئی،چیف آرگنائزر راجہ بلال،صدر نیشنل لیبر فیڈریشن ڈاکٹر تہذیب الحسن ،سیکریٹری جنرل آل پاکستان پیرا میڈیکل سٹاف فیڈریشن شاہد جان خٹک ،فیڈرل ایمپلائز سیکرٹریٹ کورڈنیشن کونسل سید فرخ سیر،این آئی ایچ یونین کے جنرل سیکرٹری چوہدری قدیر اور سییئر نائب صدر نان ٹیچنگ سٹاف عبدالرحمان جامی کے ہمراہ ’’ایوان وقت‘‘ فورم میں اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔فیڈریشن کے صدر چوہدری مختارنے کہا کہ ہم ’’نوائے وقت‘‘ کے مشکور ہیں کہ ہمیشہ ہمارے مسائل کو اجاگر کرنے میں اہم کردار اداکیا ہے ۔ تمام ایڈہاک ریلیف الائونسز کو بنیادی تنخواہ کا حصہ بنایا جائے،میڈیکل الائونسز کم از کم پانچ ہزار روپے کیا جائے ۔