ریٹائرڈ جوڈیشل آفیسر لائرز فورم کی جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر حملے کی مذمت

16 اپریل 2018

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) ریٹائرڈ جوڈیشل آفیسر لائرز فورم نے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔ فورم کا اجلاس ہجویری سنٹر میں ہوا جس میں ریٹائرڈ سیشن ججز ارشد جاوید میر، میاں غلام حسین، محمد عالمگیر خان سمیت دیگر وکلا نے شرکت کی۔ انہوں نے کہا کہا کہ جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ حکومت کی ناکامی ہے۔ ریٹائرڈ جوڈیشل آفیسر عدلیہ کو دباؤ میں لانے کے کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ اگر ملزمان گرفتار نہ ہوئے تو اگلے اجلاس میں آئندہ کا لائحہ عمل پیش کیا جائے گا۔ علاوہ ازیں ینگ لائرز فورم نے جسٹس اعجاز الا حسن کے گھر پر فائرنگ کے واقعہ کے بعد وکلا اورججوں خاص طور پرحساس نوعیت کے مقدمات کی سماعت کرنے والے ججوں کی سکیورٹی سخت کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ینگ لائرز کے رہنما مدثر چودھری ایڈووکیٹ نے نوائے وقت سے گفتگو میں کہا کہ وکلا سپریم کورٹ کے جج جسٹس اعجاز الاحسن کی رہائش گاہ پر فائرنگ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔ واقعہ انتہائی شرمناک اور لاقانونیت کا مظہر ہے یہ آئینی ادارے سپریم کورٹ پر حملہ ہے، واقعہ میں ملوث عناصر کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے۔ انہوںنے کہا کہ واقعہ میں ملوث عناصر اور انکے سرپرستوں کو بھی قانون کے کٹہرے میں لایا جائے۔ منظم گینگ کی سرپرستی کے بغیر یہ سنگین واقعہ رونما نہیں ہو سکتا تھا۔ سپریم کورٹ اس وقت آئین اور پاکستان کے مفاد کے تحفظ کیلئے فعال کردار ادا کر رہی ہے اس کے معزز ججز کو انکی آئینی ذمہ داریوں سے روکنے اور ہراساں کرنے کی یہ ایک گھٹیا اور بزدلانہ حرکت ہے۔ ججز کی سیکیورٹی رینجر زکے سپرد کی جائے۔