نیب کا دائرہ کار بڑھایا جائے، مقدمات کی طوالت سے کئی مجرم قومی ہیرو بن جاتے ہیں: پیسا

15 ستمبر 2015

لاہور (خبر نگار) سابق فوجیوں کی تنظیم پیسا نے فاٹا اور کراچی آپریشن کی بھرپور حمایت اور بری افواج کے سربراہ کے انہیں منطقی انجام تک پہنچانے کے عزم مصمم کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ پائیدار اور طویل المیعاد کامیابی کیلئے عوام کا ذہن بدلنے اور بنیادی قومی اقدار کے فروغ کی منصوبہ بندی کو اولیت دی جائے۔ حکومت نیشنل ایکشن پلان کی کامیابی کیلئے ہر ممکن کوشش کرے مگر ساتھ ہی دیرپا کامیابی کیلئے عوام کے طرز فکر میں مثبت تبدیلی کیلئے سٹرٹیجک پلاننگ کرے۔ اس بات کا فیصلہ پیسا کے صدر جنرل علی قلی خان کی قیادت میں ہونے والے اجلاس میں کیا گیا جس میں ایڈمرل تسنیم، بریگیڈئیر میاں محمود، جنرل نعیم اکبر، جسٹس جاوید نواز گنڈاپور، بریگیڈئیر عربی خان، بریگیڈئیر سائمن شرف، میجر فاروق حامد خان، میجر محمد اکرم، بریگیڈئیر مسعود الحسن اور سپریم کورٹ کے سینئیر وکیل محمد غازی اور دیگر شریک تھے۔ پیسا نے نیب کا دائرہ کار کو پورے ملک تک پھیلانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ قومی دولت لوٹنے والوں سے معمولی وصولی کے بعد کلین چٹ دے دی جاتی ہے جبکہ دیگر تفصیلات کو بھی خفیہ رکھا جاتا ہے۔ مقدمات کی طوالت کی وجہ سے کئی مجرم قومی ہیرو بن جاتے ہیں۔ پیسا نے ملکی صورتحال بہتر بنانے کیلئے ایک منصوبہ بنا رکھا ہے جسکی پریزینٹیشن الیکشن سے قبل محمد نواز شریف کو دی جا چکی ہے۔ موجودہ حالات کے مطابق اس پلان میں تبدیلی کر دی گئی اور اس سے طویل المیعاد قومی پالیسی بنانے میں استفادہ کیا جا سکتا ہے۔ اجلاس میں سابق فوجیوں کی دونوں تنظیوں کے ادغام کی منظوری دی گئی اور پیسا کے سیکرٹری جنرل کو پیس کے عہدیداروں سے مذاکرات کا اختیار دے دیا گیا۔