پولیس افسر ترقی کیس‘ بعض اوقات آٹے کیساتھ گھن بھی پس جاتا ہے: چیف جسٹس

15 ستمبر 2015
پولیس افسر ترقی کیس‘ بعض اوقات آٹے کیساتھ گھن بھی پس جاتا ہے: چیف جسٹس

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ میں پولیس سروس آف پاکستان افسروں کی گریڈ21 سے 22 میں ترقیوں کے معاملے پرعدالت عظمیٰ کے 28 اپریل 2010 کے فیصلہ پر نظر ثانی اور توہین عدالت کی متفرق درخواستوں کی سماعت ستمبر کے آخری ہفتے تک ملتوی کردی گئی۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ بعض اوقات آٹے کے ساتھ گھن بھی پس جاتے ہیںیہی حال تقرریوں کے معاملے میں ہوا ۔ تو درخواست گزار عبدالمجید کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ ان کے موکل کی 14آوٹ سٹینڈنگ اے سی آرز ہیں جبکہ گریڈ 21میں بھی دو اور بہترین اے سی آرز تھیں اسکے باوجود جونیئر کو پرموٹ کردیا گیا،پک اینڈ چوز کیا گیا قوائدو ضوابط کو نظر انداز کیا گیا ،سول سروس ایکٹ 1992ء کی خلاف ورزی کی گئی ،چیف جسٹس نے قرار دیا کہ آپکی درخواست توہین عدالت کی نظر ثانی کی نہیں عدالت نے درخواست گزار کو متعلقہ فورم ہائی پروفائل سروسز بورڈ سے رجوع کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے درخواست خارج کردی۔ درخواست گزار عبداللطیف خان کی درخواست بھی خارج کرتے ہوئے متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کی ہدایت کی۔