ایک تصویر ایک کہانی…

15 ستمبر 2015
ایک تصویر ایک کہانی…

پاک ٹی ہائوس کو انگریزوں کے دور حکومت میں ایک سکھ خاندان نے 1940ء میں تعمیر کیا اور اسکا نام انڈیا ٹی ہائوس رکھا گیا۔ کچھ عرصہ بعد اسے وائی ایم سی اے کے حوالے کر دیا گیا۔ 1947ء میں پاکستان بننے کے بعد اسکا نام تبدیل کر کے پاک ٹی ہائوس رکھ دیا گیا۔ سراج الدین احمد نے 1947ء میں ہی وائی ایم سی اے سے اسے کرایہ پر حاصل کرلیا۔ چند سال قبل اسے بند کر دیا گیا تھا۔ 2013ء میں نوازشریف نے دوبارہ کھولنے کی اجازت دے دی ا ور اس کا دوبارہ افتتاح بھی کیاگیا۔ پاک ٹی ہائوس کی خاصیت یہ ہے کہ اسے شاعروں، دانشوروں اور ادیبوں کا گھر کہتے ہیں۔ بڑے بڑے نامور اہل علم یہاں آتے تھے۔ (فوٹو: اعجاز لاہوری)

روحانی شادی....

شادی کام ہی روحانی ہے لیکن چھپن چھپائی نے اسے بدنامی بنا دیا ہے۔ مرد جب چاہے ...

ایک تصویر ایک کہانی

بلال داتا دربار کے سامنے بید کی فرنیچر مارکیٹ میں اپنے والد کے ہمراہ کام کرتا ...