دفترخارجہ کا بھارت میں پاکستانی سفارتکاروں،عملےاور ان کے اہل خانہ کو ہراساں کئے جانے پر پاکستانی ہائی کمشنر واپس طلب

15 مارچ 2018 (20:26)

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل کا ہفتہ وار بریفنگ میں کہنا تھا کہ نئی دلی میں پاکستانی سفارتکاروں، سفارتی عملہ اور ان کے اہل خانہ کو ہراساں کرنے پر اپنے ہائی کمشنر کو مشاورت کے لیے واپس طلب کیاہے،سفارت کاروں کی ہراسگی کے معاملے کو اسلام آباد اور نئی دہلی میں اٹھایا ہے،اپنے سفیروں کا تحفظ ہمارے لئے اہم ہے جس سے پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ترجمان دفترخارجہ کا کہنا تھا کہ پاکستان میں بھارتی سفارت کاروں کے حوالے سے ایسے واقعات کا علم نہیں اور نہ ہی پاکستان میں بھارتی سفارتکاروں کیساتھ ایسا کوئی واقعہ پیش آیا ہے،اگر ایسا کوئی واقعہ پیش آیا ہے تو بھارتی ہائی کمیشن نے ہمیں آگاہ نہیں کیا۔ترجمان دفتر خارجہ نے بتایا کہ افغان طالبان پر ہمارا زیادہ اثرورسوخ نہیں ہے،امریکہ کی جانب سے ملا فضل اللہ اورکمانڈر ولی کے سر پر انعام مقرر کرنے کا خیرمقدم کرتے ہیں،یہ مجرم اے پی ایس سانحہ میں ملوث تھے اور پاکستان کو یہ شخصیات مطلوب ہیں۔ڈاکٹر محمد فیصل نے مزید کہا کہ بھارت ہمیں اپنی اندرونی سیاست میں ملوث نہ کرے اوراپنی مقامی سیاست اپنے ملک میں کرے، پاکستانی سیاست اورانتخابات میں بھارت کا کوئی ذکر نہیں ہوتا،بھارتی سیاسی جماعتیں بھی پاکستان کی پیروی کریں۔