سپریم کورٹ نے توہین عدالت ازخود نوٹس کیس میں طلال چوہدری پر فرد جرم عائد کردی

15 مارچ 2018 (20:13)

سپریم کورٹ میں وزیر مملکت برائے داخلہ طلال چوہدری کیخلاف توہین عدالت ازخود نوٹس کیس کی سماعت جسٹس اعجاز افضل کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔ عدالت عظمی نے طلال چوہدری کو چارج فریم کردیا۔ فرد جرم کی کاپی طلالچوہدری کے وکیل کو فراہم کر دی گئی جبکہ طلال چوہدری نے صحت جرم سے انکار کردیا۔ وکیل طلال چوہدری کامران مرتضیٰ کا کہنا تھا کہ عدالت اپنی رائے اور مواد کو دیکھ کر چارج فریم کرتی ہے۔ اس کیس میں جو مواد ہے وہ توہین عدالت کے زمرے میں نہیں آتا۔ کیس کی سماعت ستائیس مارچ تک ملتوی کردی گئی۔ یکم فروری کو عدلیہ مخالف تقریر پر چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے مسلم لیگ ن کے رہنما طلال چوہدری کو توہین عدالت کا نوٹس جاری کیا تھا۔