رپورٹس آرہی ہیں پیشرفت نہیں ہورہی ، سپریم کورٹ : اکائونٹس بحال کئے جائیں ، رائو انوارکا خط

15 مارچ 2018

اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) سپریم کورٹ میں نقیب اللہ محسود قتل کیس کے مرکزی مفرورملزم معطل ایس ایس پی ملیر رائوانوار نے عدالت سے اکائونٹس بحال کرنے کی استدعاکردی، چیف جسٹس نے آئی جی سندھ کو رائوانوارکی کراچی اور اسلام آباد سی سی ٹی وی فوٹیج پر ان کیمرا بریفنگ دینے اورآئندہ سماعت پر ڈائریکٹر جنرل ائیرپورٹس سیکیورٹی کو طلب کرتے ہوئے سماعت 16مارچ تک ملتوی کردی ہے۔ چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ رائو انوار کا ایک اور خط آیا ہے، معلوم نہیں خط اصلی ہے یانقلی، خط میں رائو انوار نے کہا ہے کہ ان کے بینک اکائونٹ بحال کردیں، پولیس کی رپورٹس تو مل رہی ہیں لیکن کیس میں پیش رفت نہیں ہے،چیف جسٹس کے استفسارپرنے آئی جی سندھ نے بتایا کہ ایم آئی اورآئی ایس آئی معاونت کررہے ہیں، اب تک 12 ملزمان گرفتارہوچکے ہیں، باقی ملزمان کی گرفتاری کی کوشش کررہے ہیں،جسٹس عمرعطا بندیال نے ریمارکس دیئے کہ ظاہرہے کوئی نہ کوئی ملزمان کو تحفظ فراہم کررہا ہے، چیف جسٹس کے استفسارپرآئی جی سندھ نے کہا کہ رائوانوار سیاسی پناہ میں نہیں ہے، اتنا کہہ سکتا ہوں کہ وہ ہمارے صوبے میں نہیں اور اس کی آخری لوکیشن بھیرہ تھی،گرینڈ جرگہ اورسول سوسائٹی کے نمائندوں نے نقیب اللہ محسود کے مبینہ قاتل رائوانوارکی گرفتاری کیلئے تمام اداروں سے تعاون کی اپیل کی ہے، مزید سماعت 16مارچ کو کراچی رجسٹری میں ہوگی۔