چیئرمین سینٹ کا الیکشن، جے یو آئی ف کے 3 ارکان نے مسلم لیگ ن کو ووٹ نہیں دیا، فاٹا سے 2، 3 لیگی سینیٹرز نے بھی خلاف ووٹ دیا: ذرائع

15 مارچ 2018

اسلام آباد (آئی این پی + آن لائن + نوائے وقت رپورٹ) سینٹ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین کے انتخاب میں مسلم لیگ ن کو 7 ووٹ کم پڑنے کی تحقیقات کی جارہی ہیں۔ ذرائع کے مطابق جے یو آئی (ف) کے 3 ارکان نے مسلم لیگ ن کو ووٹ نہیں دیئے۔ تاہم عبدالغفور حیدری نے تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ جے یو آئی (ف) کے تمام سینیٹرز نے مسلم لیگ ن کو ووٹ دیئے۔ آئی این پی کے مطابق فاٹا سے شمیم آفریدی، مرزا محمد آفریدی، اے این پی اور مسلم لیگ ن کی سینیٹر کلثوم پروین سمیت 3 سینیٹرز نے راجہ ظفرالحق کو ووٹ نہ دینے کا انکشاف ہوا ہے۔ تحقیقات میں حیران کن انکشاف ہوئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق مسلم لیگ ن کو ممکنہ تعداد سے 7 ووٹ کم پڑے جبکہ پارٹی امیدوار کو ووٹ نہ دینے والوں میں مسلم لیگ ن کی سینیٹر کلثوم پروین اور فاٹا سے مرزا آفریدی اور شمیم آفریدی بھی شامل ہیں۔ آن لائن کے مطابق ذرائع نے بتایا کہ مسلم لیگ ن کی تحقیقات کے مطابق جے یو آئی ایف کے سینیٹر طلحہ محمود، مولانا عطا الرحمن اور مولوی فیض محمد نے بھی حکومتی امیدوار کو ووٹ نہیں دیا جس کی وجہ جے یو آئی ف کو سینٹ کی ڈپٹی چیئرمین شپ نہ ملنے پر تحفظات تھے۔ راجہ ظفرالحق کو صرف مولانا عبدالغفور حیدری نے ووٹ دیا۔ ذرائع کے مطابق تحقیقاتی رپورٹ کے بعد نواز شریف نے مولانا فضل الرحمن کو اپنے تحفظات سے آگاہ کردیا۔