تبلیغی مرکز کے باہر : رائے ونڈ : پولیس چوکی پر خودکش حملہ‘ 5 اہلکار 4 شہری شہید30 زخمی

15 مارچ 2018

لاہور/ رائے ونڈ (نامہ نگار+ این این آئی+ نوائے وقت رپورٹ) رائے ونڈ میں پولیس چیک پوسٹ کے قریب ہونے والے خودکش دھماکے میں 5 پولیس اہلکار اور 4 شہری شہید جبکہ 30 زخمی ہو گئے، بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک ہونے کے باعث ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ہے، ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کے مطابق بزدلانہ کارروائی میں پولیس کو ٹارگٹ کیا گیا، اطلاع ملتے ہی پولیس سمیت دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار، ریسکیو 1122، بم ڈسپوزل سکواڈ سمیت دیگر امدادی ٹیمیں موقع پر پہنچ گئیں اور زخمیوں کو قریب واقع شریف میڈیکل سٹی کمپلیکس اور رائے ونڈ تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال منتقل کیا گیا، قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جائے وقوعہ کو سیل کر کے قریبی آبادیوں میں سرچ آپریشن بھی شروع کر دیا، وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے آئی جی پولیس سے فوری طور پر رپورٹ طلب کر لی، صدر مملکت ممنون حسین، وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف، وزیر داخلہ احسن اقبال، تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان، (ق) لیگ کے سربراہ شجاعت حسین، پیپلز پارٹی پارلیمنٹرینز کے سربراہ آصف زرداری، پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو، جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سمیت دیگر رہنماﺅں نے دھماکے سے ہونے والے نقصان پر اپنے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ رائیونڈ اجتماع گاہ کی طرف جانے والے راستے پر قائم نثار چیک پوسٹ پر اے ایس پی، دو ایس ایچ اوز سمیت اہلکار موجود تھے کہ اچانک زوردار دھماکہ ہو گیا۔ دھماکہ اس قدر شدید تھا کہ اس کی آواز دور دور تک سنی گئی اور افراتفری پھیل گئی۔ فرانزک ماہرین بھی موقع پر پہنچ گئے۔ ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف کے مطابق دھماکے میں پولیس کو ٹارگٹ کیا گیا جس میں پولیس افسران اور اہلکار زخمی ہوئے۔ اے ایس پی اور ایس ایچ اوز سمیت دیگر پولیس اہلکار بھی زخمی ہونے والوں میں شامل ہیں۔ واقعہ کے بعد صوبائی وزیر صحت خواجہ عمران نذیر، ڈپٹی کمشنر سمیر احمد سید بھی ہسپتال پہنچ گئے اور زخمیوں کو فراہم کی جانے والی سہولتوں کا جائزہ لیا۔ سی سی پی او لاہور کے مطابق 9 پولیس اہلکاروں سمیت 30 افراد زخمی ہوئے۔ شہدا میں سب انسپکٹر محمد اسلم، کانسٹیبل تنویر، احمد اور سعید شامل ہیں۔ اے ایس پی اور ایس ایچ او سمیت 9 اہلکار زخمی ہوئے، زخمیوں میں سب انسپکٹر منظور، کانسٹیبل حامد، نعیم، فاروق، کرامت، اکرم، سعید، اسرار، جاوید شامل ہیں۔ ڈی آئی جی آپریشنز حیدر اشرف کے مطابق دھماکہ خودکش تھا۔ اے ایس پی رائے ونڈ زبیر نذیر خیریت سے ہیں۔ نامہ نگار کے مطابق عشاءکی نماز کے بعد پولیس کیمپ کے پاس خودکش حملہ آور نے اپنے آپ کو اڑا دیا جس سے 4 پولیس اہلکار اور 3 تبلیغی کارکن موقع پر ہی شہید ہو گئے، ملک بھر میں سکیورٹی بڑھا دی گئی۔ اے ایف پی کے مطابق حملہ آور نے موٹرسائیکل پر اہلکاروں کے قریب آ کر خود کو اڑا لیا۔ شہر بھر میں سکیورٹی بڑھا دی گئی۔ جگہ جگہ ناکے لگا کر چیکنگ سخت کر دی گئی۔
دھماکہ

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...