توہین عدالت کیس میں خاتون جج کو طلب نہیں کیا: ترجمان ہائیکورٹ

15 فروری 2018

لاہور (وقائع نگار خصوصی) لاہور ہائی کورٹ نے توہین عدالت کیس میں خاتون جج کو ذاتی حیثیت میں طلب نہیں کیا۔ ترجمان لاہور ہائی کورٹ نے کہا ہے کہ مورخہ 14 فروری کو مختلف اخبارات میں شائع ہونے والی خبر "لاہور ہائی کورٹ نے توہین عدالت کی درخواست پر خاتون فیملی کورٹ جج کو ذاتی حیثیت میں طلب کر لیا ہے" غلط اور حقائق کے منافی ہے۔ترجمان کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں درخواست دی گئی ہے کہ عدالت عالیہ کی جانب سے جاری حکم امتناعی کے باوجود فیملی کورٹ فیروز والا کی خاتون جج رابعہ سلیم مقدمہ کی سماعت جاری رکھے ہوئے ہیں۔ درخواست میں مذکورہ خاتون جج کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لانے کی درخواست کی گئی ہے۔