خط نستعلیق کے تحفظ کیلئے اقدامات کرنا ہونگے: احمد علی بھٹہ

15 فروری 2018

اسلام آباد (محمد نواز رضا/ وقائع نگار خصوصی) بین الاقوامی شہرت یافتہ خطاط احمد علی بھٹہ نے کہا ہے کہ برصغیر پاک و ہند میں خط نستعلیق کا وجود ختم ہو رہا ہے جس کے تحفظ کے لئے موثر اقدامات کرنے کی ضرورت ہے اس سلسلے میں قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن جو اقدامات کر رہا ہے وہ قابل تحسین ہیں‘ اس ڈویژن کے سربراہ عرفان صدیقی اور ان کی پوری ٹیم کی خدمات قابل تعریف ہیں۔ حکومت پاکستان نے عرفان صدیقی کی سربراہی میں خط نستعلیق کی حفاظت کو چیلنج کے طورپر قبول کیا ہے۔ خط نستعلیق میں ایران میرعماد کو امام مانتا ہے۔ میرعماد میرعلی میروی کو خطاطوں کا سرتاج مانتے ہیں۔ میرعلی میروی کا نستعلیق لاہوری خط کے قریب ہے ماسوائے چند ایک کے موجودہ ایرانی خط تبدیل ہو گیا ہے لیکن ہم نے اسے زندہ رکھا ہوا ہے۔ انہوں نے یہ بات بدھ کو نوائے وقت کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ 1978 سے 1984 تک روزنامہ نوائے وقت راولپنڈی میں خطاط اعلیٰ کے طورپر کام کیا‘ میرے خطاطی کے استاد حافظ محمد یوسف سدیدی تھے انہوں نے مختلف حیثیتوں سے خطاطیب میں اپنی مہارت کو تسلیم کرایا۔ ہفت قلم خطاط میں انہوں نے خط نستعلیق اور کوفی میں مہارت حاصل کی۔ آٹھویں صدی ہجری کے خط کوفی قدیم میں قرآن پاک کے 11 سپارے لکھ چکا ہوں باقی جاری ہے اور قرآن کریم خط نسخ میں 7 قرآن حکیم لکھنے کا شرف حاصل ہوا۔ ترکی کے بین الاقوامی ادارہ ’’ارسیقا‘‘ کے زیر اہتمام ہونے والے مقابلوں میں خط ثلث نے مقابلہ میں حصہ لے کر خصوصی انعام حاصل کیا۔ انہوں نے داتا دربار میں خطاطی کی 100 فن پارے تحریر کئے 150 کتب کی خطاطی کی ہے جو ایک ریکارڈ ہے۔ بابا حسن دین باغبانپورہ کے مزار کی خطاطی کی‘ سید سردار علی شاہ مناواں لاہور کی خطاطی کا اعزاز حاصل ہوا۔ انہوں نے سینکڑوں طالب علموں کو فی سبیل اللہ فن خطاطی کی تربیت دی ان کے لاہوری خط نستعلیق کو ایران و عراق اور ترکی میں پسند کیا گیا۔ سعودی عرب میں ان کے اور ساتھیوں کے فن پاروں کی نمائش ہوئی۔ احمد علی بھٹہ نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ نستعلیق میں لاہوری اسلوب عبد الرشید دہلوی سے شروع ہوا اب تک کے تمام استاد ان ہی سے رشتہ جوڑتے ہیں۔ لاہور کے خطاطوں نے کبھی ایران کا اثر قبول نہیں کیا وہ ہمیشہ وسطی ایشیا کی روایت کے امین رہے۔ انہوں نے بتایا کہ وہ ان دنوں قومی تاریخ و ادبی ورثہ ڈویژن کے زیر اہتمام قومی خطاطی مقابلے کے سلسلے میں اسلام آباد آئے ہوئے ہیں۔