لاپتہ شہری کی بازیابی سے متعلق کیس میں وزارت دفاع سے رپورٹ طلب

15 فروری 2018

اسلام آباد (وقائع نگار) اسلام آباد ہائی کورٹ نے لاپتہ شہری صمیم عفان کی بازیابی کے حوالے سے دائر درخواست کی سماعت ملتوی کرتے ہوئے وزارت دفاع سے دو ہفتوں میں رپورٹ طلب کر لی ہے۔ عتیق الرحمن کی جانب سے دائر درخواست کی سماعت گزشتہ روز عدالت عالیہ کے جسٹس اطہر من اللہ نے کی۔ اس موقع پر درخواست گزار کی جانب سے انعام الرحیم ایڈوکیٹ جبکہ وزارت دفاع کی جانب سے کی کیپٹن خالد عباس عدالت میں پیش ہوئے۔ دوران سماعت درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ صمیم عفان کو 29 جنوری 2018ء کو اس کے گھر واقع G-13 سے اٹھایا گیا۔ بعد ازاں خفیہ ایجنسی کے اہلکاروں نے 2 فروری 2018 کو دوبارہ چھاپہ مارا اور گھر سے لیپ ٹاپ، موبائل فون اور پاسپورٹ لے گئے۔ انہوں نے عدالت کو بتایا کہ مغوی الیکٹریکل انجینئر ہے۔ اس موقع پر جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ کیا وزارت دفاع کی جانب سے جواب داخل کرا دیا گیا ہے ، اس پر کیپٹن خالد عباس نے جواب داخل کرانے کے لئے چار ہفتوں کی مہلت طلب کی۔ فاضل جسٹس نے کہا کہ چار ہفتے نہیں دے سکتے ، دو ہفتوں میں رپورٹ جمع کرائیں۔