لیبیا کشتی حادثہ، گیارہ پاکستانیوں کی میتیں اسلام آباد پہنچا دی گئیں

15 فروری 2018

راولپنڈی (اپنے سٹاف رپورٹر سے+ جنرل رپورٹر) لیبیا میں کشتی الٹنے کے حادثہ میں جاں بحق گیارہ پاکستانیوں کی میتیں سعودی ائر لائن کی پرواز کے ذریعے بدھ کو بینظیر بھٹو انٹر نیشنل ائرپورٹ اسلام آباد پہنچا دی گئیں یہ نعشیں جدہ سے پرواز نمبرSV - 722 کے ذریعے لائی گئیں۔ لواحقین بھی ائرپورٹ پہنچ گئے جبکہ ائرپورٹ انتظامیہ نے مین گیٹ پر سکیورٹی بڑھا دی تھی جس سے متوفین کے لواحقین کو مشکلات درپیش رہیں۔ متوفین کے ورثاء دھاڑیں مار کر روتے ہوئے اپنے پیاروں کی میتیں وصول کرنے گئے۔ جاں بحق پاکستانیوں کا تعلق راولپنڈی کی تحصیل گوجر خان، گجرات، منڈی بہائولدین، سرگودھا اور دیگر علاقوں سے تھا۔ ائرپورٹ پر ورثاء کی جانب سے ایک خاتون سمیت دیگر دس میتوں کی شناخت کے عمل کے بعد ضابطے کی کارروائی کے بعد میتیں ورثاء کے سپرد کی گئیں۔ امیگریشن حکام نے منڈی بہائولدین کے متوفی اکرام الحق ولدعظمت اللہ ، ولید اکرم ولد محمد اکرم سکنہ گجرات ، مرزا غلام فرید ولد مرزا غلام نبی سکنہ گوجر خان ، تنزیل الرحمن ولد محمد یونس سکنہ سیالکوٹ ، محمد عزیز ولد عبدالرحمٰن سکنہ سرگودھا ،لقمان علی ولد شوکت علی سکنہ گجرات ، کاشف جمیل ولد محمد جمیل سکنہ گجرات ، عظمت بی بی زوجہ محمد اسمعٰیل سکنہ گجرات ، مظہر حسین ولد ممتاز حسین سکنہ گجرات ، فرحان علی ولد محمد شریف سکنہ گجرات اور محمد قاسم ولد محمد امجد سکنہ منڈی بہائوالدین کی میتیں ورثاء کے حوالے کی گئیں جو میتیں لے کر آبائی علاقوں کو روانہ ہوگئے ۔ دریں اثناء بینظیر انٹر نیشنل ائرپورٹ پر ڈائریکٹر کرائسز سیل شوزب عباس نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وزارت خارجہ نے انٹر نیشنل ٹریولنگ سے لے کر ایمبو لینس تک کے اخراجات ادا کئے باقی نعشیں ایک ہفتے تک پاکستان پہنچا دی جائیں گی، انہوں نے کہا کہ مختلف محکموں کی ذمہ داری ہے کہ وہ انسانی سمگلنگ روکیں ‘ جو انسانی سمگلنگ کے پیچھے ہیں ان کو سزائیں ملنی چاہئیں۔