وزیراعلیٰ پنجاب کا خود انحصاری کی پالیسی اپنانے کا عزم

15 فروری 2018

پنجاب میں اربوں کے پروگراموں کا افتتاح۔ خون سے لکھ کر دیتا ہوں عالمی یا ایشیائی بنکوں سے مانگ کر مسائل حل نہیں ہونگے: شہباز شریف۔ 70 برس سے حکومتیں سب اچھا الاپتی رہیں۔ مشرف نے بھاشا ڈیم کے نام پر عوام کودھوکہ دیا۔ نظام نہ بدلاتو خونی انقلاب کوئی نہیں روک سکتا۔ وزیراعلیٰ پنجاب ۔
پنجاب میں میاں شہباز شریف کی ذاتی کاوشوں‘ گڈ گورننس اور ترقیاتی پروگراموں کے آغاز سے جس معاشی اور اقتصادی ترقی کی راہ کھلی ہے اس سے پنجاب ہی نہیں پورے ملک کو فائدہ ہو رہا ہے۔ اس سے قبل جنوبی پنجاب میں ترقی کا نہ ہونا اور اسے نظرانداز کرنے کا شور مچایا جاتا رہا ہے۔ وزیر اعلیٰ پنجاب نے جس طرح پسماندہ علاقوں اور جنوبی پنجاب میں ترقیاتی منصوبوں کا آغاز کرکے وہاں کے مسائل کوحل کرنے کی پالیسی اپنائی ہے اسکی بدولت وہاں بھی معاشی اوراقتصادی ترقی کی راہ کھل رہی ہیں۔ ہماری حکومتوں کی ایک بڑی خامی یہ رہی ہے کہ وہ اپنے وسائل سے اپنے مسائل حل کرنے کی بجائے ہمیشہ بیرونی بنکوں سے بھاری سود پر قرضے حاصل کرتی ہیں جس کی وجہ سے معیشت بھاری غیر ملکی قرضوں کے بوجھ تلے دب جاتی ہے۔وزیر اعلیٰ پنجاب نے درست کہا ہے کہ عالمی یا ایشیائی بنک سے قرضے لینے سے مسائل حل نہیں ہوں گے۔ پہلی حکومتوں نے جس طرح ترقیاتی کاموں کے نام پر عوام کودھوکا دیا وہ سب کے سامنے ہے۔ انہی حالات کو دیکھ کر وزیراعلیٰ پنجاب بار بار اشرافیہ کو متنبہ کرتے آ رہے ہیں کہ اگر موجودہ کرپٹ اوربوسیدہ نظام کونہ بدلا گیا تو خونی انقلاب آ سکتا ہے۔ اگر ہمارے تمام ادارے اور اشرافیہ ملک و قوم کی ترقی‘ فلاح اور خوشحالی چاہتے ہیں تو انہیں اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہو گا پسے اور کچلے ہوئے پسماندہ طبقات کو آگے لانا ہو گا انکی حالت بہتر بنانا ہو گی۔ جس کیلئے وزیر اعلیٰ پنجاب کوشاں ہیں۔چنانچہ آئندہ انتخابات کے نتائج میں میاں شہبازشریف کی وزارت عظمیٰ کی راہ ہموار ہوگئی تو وہ ملکی اور قومی ترقی کیلئے اپنے اعلانات اور ایجنڈا کو عملی قالب میں ڈھال کر عوام کا مقدر سنواردینگے۔