استاد عالم نے بلیو پاٹری کو نئے زاویے‘ رنگوں‘ میچنگ سے متعارف کرایا: ثقافتی و سماجی شخصیات

15 فروری 2018

ملتان (سلیم ناز سے) صدارتی ایوارڈ یافتہ مصور‘ نقاش‘ کاشی گر استاد محمد عالم کی وفات پر ملتان کے ثقافتی و سماجی حلقوں نے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔ استاد عالم اپنی ذات میں ایک ادارہ تھے۔ انہوںنے نقاشی اور کاشی کے فن کی ڈوبتی کشتی کو سہارا دیا۔ ملتان آرٹس کونسل کے سابق ڈائریکٹر محمد علی واسطی نے کہا ہے استاد عالم کی زیر سرپرستی بلیو پاٹری انسٹی ٹیوٹ نقاشی اور کاشی گری کے فروغ میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ ان کی وفات سے کاشی‘ نکاشی کا فن ایک ماہر فنکار و دستکار سے محروم ہو گیا ہے۔ ممتاز مصور استاد شمس الدین اور علی اعجاز نظامی اور عبدالرحمن نقاش نے کہا استاد محمد عالم تقریباً 55 سال سے اس فن سے وابستہ تھے۔ انہوں نے اپنا خاندانی فن بیٹوں کو منتقل کر کے اس فن کو زندہ رکھا۔ ملتان آرٹس کونسل کے ریذیڈنٹ ڈائریکٹر سجاد جہانیہ نے کہا استاد عالم نے بلیو پاٹری کو نئے زاویے‘ رنگوں اور میچنگ سے متعارف کرایا ہے۔ مرحوم بین الاقوامی شہرت کے حامل فنکار تھے۔ کالم نگار اظہر سلیم مجوکہ اور شاکر حسین شاکر نے کہا مرحوم کا سب سے بڑا کمال ان کے کاشی تجربات ہیں۔ ان کا کام دنیا بھر میں چیلنج کی حیثیت رکھتا ہے۔ میلسی کے ممتاز مصور سعید انجم‘ اعجاز انجم اور اوکاڑہ کے بین الاقوامی شہرت یافتہ مصورانہ خطاط اصغر مغل نے بھی استاد عالم کی وفات پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔ مرحوم کی نماز جنازہ میں ملتان کے سماجی‘ ثقافتی‘ ادبی حلقوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ مرحوم کی روح کے ایصال ثواب کیلئے قرآن خوانی کل جمعہ 16 فروری کو 9 بجے جامع مسجد گلشن فیض کالونی رانا سجاد والی گلی نمبر 9 میں ہو گی۔
استاد عالم/ اظہار افسوس