پاکستان اور برطانیہ کا دوطرفہ تجارت اور کاروباری تعلقات کو فروغ دینے پر اتفاق

15 فروری 2018

اسلام آباد (نامہ نگار) پاکستان اور برطانیہ نے مختلف شعبوں میں دو طرفہ شراکت داری کے ذریعے تجارت اور کاروباری تعلقات کو فروغ دینے پر اتفاق کیا ہے۔ بدھ کو برطانوی وزیراعظم کے پاکستان کیلئے تجارتی نمائندہ اور رکن پارلیمنٹ رحمان چشتی نے وفاقی وزیر نجکاری دانیال عزیز سے ملاقات کی، ملاقات میں پاکستان اور برطانیہ کے درمیان مختلف شعبوں میں تجارتی تعلقات بڑھانے کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ دانیال عزیز نے پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے میں برطانیہ کی دلچسپی کا خیرمقدم کیا اور دونوں ممالک کے مابین طویل دوطرفہ تعلقات کو سراہا۔ انہوں نے پاکستان کے ساتھ کاروبار کرنے میں برطانوی کمپنیوں کی دلچسپی اور آمادگی کی بھی تعریف کی اور اسے پاکستان کی ترقی کیلئے ان کا بڑا اہم کردار قرار دیا۔ انہوں نے نجی شعبہ میں برطانیہ کی سرمایہ کاری کا خیرمقدم کیا۔ دانیال عزیز نے کہا کہ پاکستان کو ماضی میں سرمایہ کار دوست ملک نہیں سمجھاجاتا تھا تاہم موجودہ حکومت نے سرمایہ کاری سرگرمیوں کی بحالی کیلئے مؤثر اقدامات اٹھائے ہیں جس کے مثبت نتائج سامنے آ رہے ہیں۔ انہوں نے ٹرانسپورٹ، مینوفیکچرنگ، توانائی، مالیاتی اداروں اور انفراسٹرکچر کے شعبوں میں دلچسپی لینے کی حوصلہ افزائی کی اور کہا کہ وہ نجکاری کے شفاف سودوں میں بھرپور حصہ لیں۔ انہوں نے خاص طورپر پی آئی اے اور پاکستان سٹیل ملز کا بھی ذکر کیا۔ اس موقع پر رحمٰن چشتی نے کہا کہ برطانیہ پاکستان کو ترجیح دیتا ہے اور برطانیہ نے جی ایس پی پلس کے درجہ کیلئے پاکستان کی ہمیشہ حمایت کی ہے اور وہ پاکستان کی ترقی اور تجارت کے لیے بھر پور تعاون کرے گا۔ دانیال عزیز نے پاکستان کی قیادت کے نجکاری پروگرام کو آگے بڑھانے کے پختہ عزم کا بھی اظہار کیا۔ برطانوی تجارتی نمائندہ کے وفد میں برطانوی سرمایہ کاری کے ڈائریکٹر انفراسٹرکچر، سرمایہ کاری منیجر ہاٹ لیسٹر، ڈپٹی ڈائریکٹر ٹریڈ برطانوی ہائی کمشنر اور برٹش ڈپٹی ہائی کمشنر الین برنز اور برطانیہ کی مختلف تجارتی و سرمایہ کارکمپنیوں کے نمائندے اور عہدیداران شامل تھے۔