پاکستان اور کینیڈا کا زراعت کے شعبہ میں تحقیق و ترقی میں تعاون پر اتفاق

15 فروری 2018

اوٹاوا (آئی این پی) پاکستان اور کینیڈا نے زراعت کے شعبے میں تحقیق و ترقی میں تعاون پر اتفاق کیا ہے جبکہ کینیڈ انے زراعت پر مبنی صنعت کے تمام شعبوں میں پاکستان کو تکنیکی تعاون فراہم کرنے اور اس حوالے اعلیٰ سطحی وفود کے تبادلوں کی پیشکش کی ہے ۔ یہ اتفاق رائے گزشتہ روز وفاقی وزیر تجارت پرویز ملک اور کینیڈا کے وزیر برائے زراعت و زرعی خوراک کے درمیان ہونے والی ملاقات میں کیا گیا۔ ملاقات کے دوران دونوں ممالک کے درمیان زراعت کے شعبے میں جاری تعاون کے پہلوئوں کا جائزہ لیا گیا جبکہ1960 سے ڈیموں کی تعمیر اور آبپاشی کے نظام میں کینیڈا کے تعاون کو سراہتے ہوئے وزیر تجارت پرویز ملک نے کہا کہ یہی وقت ہے کہ کینیڈا جنگلات ‘ ماہی گیری‘ بھاری زرعی مشینری اور زراعت کے دوسرے شعبوں میں پاکستان کے ساتھ اپنے تعاون کو وسعت دے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک ابھرتی ہوئی معیشت ہے اور پانچ فیصد سے زیادہ شرح نمو کے ساتھ پاکستان زرعی شعبے میں کینیڈا کے سرمایہ کاروں کے لئے ایک اہم مارکیٹ ہے۔ پرویز ملک نے کہا کہ کینیڈا کی پاکستان سے درآمد زیادہ تر زرعی مصنوعات پر منحصر ہے اس لئے دونوں ممالک کو تحقیق‘ ترقی اور زراعت کے شعبے میں اجراء کے تجربات کا تبادلہ کرنا چاہئے۔ جبکہ کینیڈا کے وزیر برائے زراعت و زرعی خوراک نے پاکستان میں گزشتہ پانچ سالوں کے دوران اقتصادی ترقی کو سراہا اور زراعت کے شعبے میں مکمل تعاون پر آمادگی کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ کینیڈا زراعت پر مبنی صنعت کے تمام شعبوں میں پاکستان کو تکنیکی تعاون فراہم کرنے کی پیشکش کرتا ہے اور اس معاملے پر رکاوٹیں دور کرنے کے لئے اعلیٰ سطحی وفود کے تبادلوں پر بھی تیار ہے۔ فریقین نے زراعت پر مبنی کینیڈا کی پاکستان کو برآمدات کے دیرپا اور سائنس پر مبنی حل کی تلاش پر اتفاق کیا جو سالانہ 600ملین ڈالر سے زائد ہیں۔