پانی آلودہ کرنیوالوں سے نرمی نہیں ہوگی : واٹر کمیشن

15 فروری 2018

ماتلی/سکھر/حیدرآباد( نامہ نگاران) واٹر کمیشن بورڈ کے سربراہ چیف جسٹس ریٹائرڈ امیر ہانی مسلم نے حیدرآبادکے مختلف علاقوں میں فلٹر پلانٹس اور نہروں کے پشتوں کا معائنہ کیا۔ ان کے ہمراہ ڈپٹی کمشنر حیدرآباد محمد سلیم راجپوت ، ایس ایس پی پیر محمدشاہ، میئر سید طیب حسین، میونسپل کمشنر شاہد علی خان، اور دیگر متعلقہ افسران بھی موجود تھے۔ دورے کے دوران چیف جسٹس(ر) امیر ہانی مسلم نے ڈی سی حیدرآباد میں نہروں کی صفائی کرائی جائے او رنہروں کے کناروں پر جمع شدہ کوڑا کرکٹ ہٹایا جائے۔ انہوں نے کہاکہ وہ بار بار حیدرآباد کا دورہ کریں گے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ حیدرآباد کے فلٹر پلانٹ پر جاری کام فوری طور پر مکمل کرکے شہریوں کو صاف پانی مہیا کیا جائے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ کام میں کوتاہی کرنے والے کسی افسر کو نہیں بخشا جائے گا میں اپنی ذمہ داری نبھا رہا ہوں افسرا ن کو بھی چاہئے کہ وہ اپنی ذمہ داریاں بہتر طورپر ادا کریں ضلعی انتظامیہ نے واٹر کمیشن کے سربراہ کو بتایا کہ نہروں کے پشتوں پر قائم قبضے ختم کرائے جارہے ہیں۔ جسٹس امیر ہانی مسلم نے سوال کیا کہ محکمہ آب پاشی کیا کررہا ہے اس پر چیف انجینئر کوٹری بیراج نے کہاکہ تین سے چار روز میں قبضے ختم کرادیئے جائیںگے اور تصاویر کے ساتھ رپورٹ آپ کو ارسال کریں گے۔ ماتلی سے نامہ نگار کے مطابق واٹر کمیشن کے چیئر مین جسٹس (ر )امیر مسلم ھانی نے ضلع ٹنڈو محمد خان سمیت ماتلی میںمیونسپل کے واٹر سپلائی نظام ، ڈرینج سسٹم اور شہر کے درمیان سے گزرنے والی پھلیلی کینال اور اکرم واہ کے دونوں کناروں کا بھی تفصیلی معائنہ کیا۔اس موقع پر انہوں نے اپنے ایک دوست کی جانب سے دیئے جانے والے ظہرانے میں بھی شرکت کی، انہوں نے واٹر سپلائی کے تالابوں کے اطراف قائم تجاوزات ختم کئے جانے سمیت نہروں کے کناروں پر قائم بھینسوں کے باڑے ہٹائے جانے والی میونسپل اور سرکاری انتظامیہ کی کاروائی کا بھی جائزہ لیا ،انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ پانی کو آلودہ کرنے والوں کے ساتھ کسی قسم کی نرمی برداشت نہیں کی جائے گی ،واٹر کمیشن کے چیئرمین نے میونسپل ماتلی کے پانی کے تالابوںکے معائنہ کے دوران اس بات کا اعتراف کیا کہ ماتلی کے تالاب صفائی اور بہتر انتظام کے حوالے سے سندھ کے دیگر شہروں کے مقابلے میں کافی بہتر ہیں، اس موقع پر انہوں نے تالابوںکے اطراف کی چہار دیواری کی تعمیر کی طرف بھی چیئر مین عبدلرئوف نظامانی کی توجہ دلائی ، اس موقع پر چیئرمین اور چیف میونسپل آفیسر ماتلی ظفر اقبال مغل نے شہریوں کو مزید بہتر پانی فراہم کرنے کے حوالے سے اپنی تجاویز پیش کیں، جسٹس (ر)امیر مسلم ھانی نے انہیں حل کرانے کے لئے واٹر کمیشن کے اجلاس میں رکھنے کی یقین دہانی کرائی۔ ماتلی کے دورہ کے موقع پر ان کے ساتھ ڈپٹی کمشنر بدین ڈاکٹر شہزادطاہر تھیم ،سیکریٹری پبلک ہیلتھ سندھ اور اسسٹنٹ کمشنرماتلی ابراہیم سموں اور مختیار کار قمر الدین راھیپوٹو بھی موجود تھے ۔ سکھرسے نامہ نگار کے مطابق سندھ واٹر کمیشن کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ امیر ہانی مسلم کی ہدایات پر سول جج/فیملی جج سکھر عبدالفہیم پنھور نے انوائرومینٹل پروٹیکشن ایجنسی کی ٹیم اور سب انجینئر سائیٹ کے ہمراہ سکھر کے مختلف صنعتی یونٹس کا تفصیلی دورہ کر کے واٹر سپلائی اور ڈرینج کے نمونے حاصل کر لئے ہیں اور ہدایات جاری کی ہیں کہ سیپٹک ٹینک اورٹریٹمنٹ پلانٹس نصب نہ کرنے والے صنعتی یونٹس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے اور ان کی بندش کے لئے شوکاز نوٹسز جاری کئے جائیں ۔ انہوں نے یہ ہدایات سائیٹ ایریا میں مختلف صنعتی یونٹس اور اسمال انڈسٹریز کے دورے کے دوران ای پی اے اور سائیٹ افسران کو دیں ۔ سول جج سکھر عبدالفہیم پنھور نے اسسٹنٹ ڈائریکٹر ای پی اے اور سائیٹ سب انجینئر کو ہدایت کی کہ تمام صنعتی یونٹس میں ٹریٹمنٹ پلانٹ لگانے کے عمل کو یقینی بنایا جائے اور خلاف ورزی کی صورت میں کارروائی کر کے یونٹس کی بندش کے لئے شوکاز نوٹسز جاری کئے جائیں جبکہ تمام فلور ملز کو سیپٹک ٹینکس لگانے کا پابند کیا جائے ۔ دورے کے دوران سول جج کی زیر نگرانی ای پی اے ٹیم نے صنعتی یونٹس سے واٹر سپلائی اور ڈرینج کے نمونے حاصل کر لئے ۔
امیر ہانی مسلم