گناکاشتکاروں کا 18 فروری کو کراچی پریس کلب پر بھوک ہڑتال کا اعلان

15 فروری 2018

حیدرآباد( نمائندہ نوائے وقت) سندھ کی مختلف کاشتکار تنظیموں نے گنے کے نرخ نہ ملنے اور پانی کی عدم فراہمی سمیت دیگر مسائل کے حل کے لئے18 فروری کو کراچی پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرے اور علامتی بھوک ہڑتال کا اعلان کیا ہے۔ ا س پر مسائل حل نہ ہوئے تو کاشتکار وزیراعلیٰ ہائوس کی طرف مارچ کریں گے۔ اس سلسلے میں فیاض شاہ راشدی، علی پلیہہ،زاہد نون،جاوید جونیجو اور دیگر کاشتکار رہنمائوں نے حیدرآباد پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سندھ ہائی کورٹ کی جانب سے دو بار گنے کی قیمت 172 روپے فی من اور 160 روپے فی من اور سپریم کورٹ نے 182روپے فی من مقرر کی ہے۔ تاہم حکومت سندھ کاشتکاروں کو گنے کی قیمت دلوانے میں ناکام ہے انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ سے اپیل کی ہے کہ سندھ کے شوگر ملزھ مالکان کو عدالتی احکامات کے تحت گنے کا نرخ 172 روپے فی من ادا کرنے کا پابند بنائے ۔ انہوں نے مسائل کے حل نہ ہونے کی صورت میں 18 فروری کو کراچی پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ اور مطالبات تسلیم ہونے تک بھوک ہڑتال کرنے کا اعلان کیا۔
گنا / کاشتکار اعلان