سندھ ر یز رو پو لیس کے بر طرف اہلکا روں کااحتجا جی دھر نا

15 فروری 2018
سندھ ر یز رو پو لیس کے بر طرف اہلکا روں کااحتجا جی دھر نا

کراچی ( نیو ز رپو رٹر)نا ئب امیر جماعت اسلامی پاکستان و سابق ایم این اے اسد اللہ بھٹو نے مطا لبہ کیا ہے کہ سندھ حکو مت محکمہ پو لیس سے برطرف اہلکاروں کو انسانی ہمدردی کے ناطے بحا ل کر کے تین ہزار خاندانوں کو فاقہ کشی سے بچا یا جائے ۔ سیاسی بنیا دوں پرنئی بھرتیا ں کرنے کے بجا ئے ایس آر پی کے تربیت ہا فتہ اہلکاروں کو بحا ل کیا جا ئے کیو نکہ انہو ں نے تین چار سال سے ڈیو ٹی بھی دی ہے ،15 دنو ں سے پر یس کلب پر سر اپا احتجا ج اہلکا روں کی طرف حکو متی نما ئندوں کا نہ آنا افسوس نا ک اور بے حسی کی انتہا ہے ۔ ان خیا لات کا اظہا ر انہو ں نے پر یس کلب پر بر طرف ریز ر و پو لیس اہلکا روں کے احتجا جی دھر نے سے خطاب کر تے ہوئے کیا ۔ اسدا للہ بھٹو نے کہا کہ حکو مت کی غلط ،مفاد پر ستانہ اور اقر باپر وری کی پا لیسیو ں سے سندھ کا ہر شعبہ زبو ں کا حالی کا شکا ر ہے ، جبکہ اسا تذہ سے لے کر پو لیس اہلکار اپنے حقو ق کیلئے سر اپا احتجاج ہیں مگر حکمرانوں کے کا نو ں پر جو ں تک نہیں رینگتی ۔ انہو ںنے زور دیا کہ حکو مت سندھ ریزرو پو لیس اہلکا روں کو بحا ل کر کے 3000 خا ندانو ں کو فاقہ کشی سے بچا ئے۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...