ہلمند میں جنگ جاری‘ طالبان نے اتحادی فوج کی پیش قدمی روک دی

15 فروری 2010
کابل (اے پی پی) صوبہ ہلمند میں طالبان کی بچھائی گئی بارودی سرنگوں اوردیسی ساختہ بموں نے نیٹو فوج کی پیشقدمی روک دی ، طالبان کے تربیتی مرکز پر قبضہ کرکے سینکڑوں بوریاں منشیات اور دھماکہ خیز مواد برآمد کر لیا، اسی مرکز پر جھنڈا لہرانے کی تقریب پر فائرنگ سے اتحادی اور افغان فوجیوں میں کھلبلی مچ گئی۔ اتوار کو غیر ملکی ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق طالبان کے مضبوط گڑھ مرجاہ کے خلاف مشترکہ فوجی آپریشن کے دوسرے روز اتحادی اور افغان فوج کو طالبان کی جانب سے داخلی راستوں، پلوں، گھروں کے اردگرد بچھائی گئی بارودی سرنگوں اور دیسی ساختہ بموں کے باعث پیشقدمی میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ دوسری جانب افغان حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ مرجاہ کی لڑائی میں 27 طالبان کو شہید جبکہ درجنوں کو حراست میں لیا گیا ہے۔ دریں اثناء افغان صوبہ ہلمند کے گورنر گلاب مینگل نے کہا ہے کہ اتحادی اور افغان فورسز کو آپریشن کے دوران پاکستانی طالبان کی طرف سے سخت مزاحمت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ نیٹو فوجیوں نے صوبہ ہلمند کے ضلع ناد علی میں طالبان کے خلاف کارروائی کے دوران دو راکٹ مار کر 12 شہری شہید کر دیئے‘ جس پر نیٹو کمانڈر نے افغان صدر حامد کرزئی سے معافی مانگی ہے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...