ججوں کی تقرری : حکومت چیف جسٹس کے مشورے پر عمل کرے : اٹارنی جنرل

15 فروری 2010
اسلام آباد (نمائندہ نوائے وقت) اٹارنی جنرل انور منصور خان نے اتوار کو چیف جسٹس افتخار محمد چودھری سے سپریم کورٹ میں ملاقات کی۔ ملاقات اٹارنی جنرل کی درخواست پر ہوئی چیف جسٹس سے ملاقات سے قبل اٹارنی جنرل نے وزیراعظم گیلانی سے بھی ملاقات کی۔ اٹارنی جنرل اتوار کی صبح کراچی سے اسلام آباد پہنچے تھے۔ انہوں نے وزیراعظم سے ملاقات کے بعد چیف جسٹس آفس کو درخواست بھجوائی کہ وہ چیف جسٹس سے ملنا چاہتے ہیں اس درخواست کو منظور کرتے ہوئے چیف جسٹس اپنی رہائش گاہ سے سپریم کورٹ آئے۔ ملاقات ایک گھنٹے تک جاری رہی جس میں ججوں کی تقرری اور معطلی کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال پر بات چیت کی گئی۔ ملاقات کے موقع پر سپریم کورٹ کے جسٹس خلجی عارف حسین اور جسٹس رحمت حسین جعفری بھی موجود تھے۔ علاوہ ازیں معتبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ اٹارنی جنرل نے ججوں کی تقرری کے معاملہ میں حکومت کو چیف جسٹس کی مشاورت پر عمل کرنے کا مشورہ دیا ہے اور حکومت نے اٹارنی جنرل کی رائے کا احترام کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیراعظم اور جسٹس افتخار سے ملاقاتوں کے بعد اٹارنی جنرل پورا دن اپنے آفس میں رہے اور اطلاع کے مطابق بعض تحریری نوٹس تیار کرتے رہے۔ ذرائع کے مطابق انہوں نے وزیراعظم کو یہی مشورہ دیا ہے کہ حکومت چیف جسٹس کی مشاورت کو فوقیت دے کیونکہ آئین اور عدالتی فیصلوں کی روشنی میں بھی اس معاملے میں چیف جسٹس کو فوقیت حاصل ہے۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...