پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن کے کارکنوں نے ایک دوسرے کے قائدین کے پتلے جلائے

15 فروری 2010
لاہور/ کراچی/ بہاولپور/ ملتان (رپورٹنگ ٹیم+ نیوز ایجنسیاں) پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے صدر آصف علی زرداری کی حمایت میں گذشتہ روز لاہور‘ کراچی‘ پشاور‘ راولپنڈی‘ ملتان اور دیگر شہروں میں مظاہرے کئے۔ مظاہرین نے لاہور میں نوازشریف کے پتلے نذر آتش کئے اور مسلم لیگ ( ن ) کے قائد کیخلاف بھی زبردست نعرے لگائے۔ اس موقع پر پیپلزپارٹی پنجاب کے صدر رانا آفتاب‘ اصغر گجر‘ سینیٹر عابد رضا عابدی و دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صدر زرداری آئین و قانون کے مطابق اقدامات کر رہے ہیں‘ بعض قوتوں کو جمہوریت ہضم نہیں ہو رہی‘ وہ سازشیں کر رہے ہیں‘ بند کی جائیں۔ ملتان میں بھی پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے نوازشریف کے پتلے نذر آتش کئے جبکہ خالد حنیف‘ ملک مختار سمیت دیگر رہنماﺅں نے کہاکہ ججوں کی تقرری و تبادلہ صدر کا آئینی اختیار ہے‘ اپوزیشن جماعتیں اس پر سیاست نہ چمکائیں‘ ہم صدر زرداری کے ساتھ ہیں۔ اے پی پی کے مطابق اسلام آباد میں رکن صوبائی اسمبلی نرگس فیض کی زیرقیادت خواتین نے ریلی نکالی جبکہ پشاور میں بھی صدر کے حق میں بڑی ریلی نکالی گئی۔ مقررین نے کہاکہ حکومت بچانے کیلئے لاکھوں کارکن سروں پر کفن باندھ کر نکل آئے ہیں۔ دوسری جانب مسلم لیگ ( ن ) کے کارکنوں نے مختلف شہروں میں نوازشریف کے پتلے نذر آتش کئے جانے کے خلاف ملتان‘ بہاولپور اور مظفر گڑھ میں احتجاجی مظاہرے کئے۔ بہاولپور میں شرکاءنے فوارہ چوک میں ٹائر جلاکر سڑک بلاک کر دی اور صدر آصف زرداری کا پتلا نذر آتش کیا۔ اس دوران درجنوں لیگی کارکنوں نے دھرنا دیا اور ”گو زرداری گو“ گو گیلانی گو“ کے نعرے بھی لگائے جبکہ ججوں کے حق میں مسلم لیگ ( ن ) شعبہ خواتین پنجاب کی رہنما کنول کی زیرقیادت ماڈل ٹاﺅن ایچ بلاک سے فیصل ٹاﺅن موڑ تک ریلی نکالی گئی۔ خواتین شرکاءنے حکومت کیخلاف اور عدلیہ کے حق میں زبردست نعرے لگائے۔ ملتان میں رہنماﺅں نے خطاب میں کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کے کارکنوں نے رویہ تبدیل نہ کیا تو ہم اپنے کارکنوں کو نہیں روک سکیں گے۔ شیخوپورہ میں میاں جاوید لطیف رکن قومی اسمبلی نے انجمن تجران کی ریلی سے خطاب میں کہاکہ قوم عدلیہ کا تحفظ کرنا جانتی ہے‘ کرپشن زدہ لوگوں نے ملک کو سنگین بحرانوں سے دوچار کر دیا ہے۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...