اسلامی تعاون تنظیم کا غیرمعمولی اجلاس مکہ مکرمہ میں آج پھرہوگا، جس میں شام کی رکنیت معطل کیے جانے کا امکان ہے۔

15 اگست 2012 (10:38)

او آئی سی کا ہنگامی اجلاس سعودی عرب کے فرمانرواشاہ عبداللہ بن عبدالعزيزنےاسلامی ممالک کی صورتحال اورمیانمارمیں مسلمانوں کی نسل کشی کے معاملے پرغورکیلئے طلب کیا ہے۔ اجلاس میں شام کے صدربشارالاسد کی حکومت پرحزب اختلاف کےخلاف کارروائیاں بند کرنے کیلئے دباؤڈالنےکیلئےغورکیا جائیگا جبکہ اوآئی سی سے شام کی رکنیت معطل کیے جانے کا بھی امکان ہے۔ شاہ عبداللہ بن عبدالعزیزکی زیرصدارت افتتاحی سیشن سےخطاب کرتے ہوئے میں سینگال کے صدرکا کہنا تھا کہ تمام اسلامی ممالک آزاد فلسطینی ریاست کے قیام کے لیے کوشاں ہیں انہوں نے کہا کہ غربت اورافلاس کےشکارمسلم ممالک کی مدد کی جانی چاہیےجبکہ او آئی سی سیکرٹری جنرل اکمل الدین احسان کا کہنا تھا کہ مسلم ممالک کوترقی یافتہ ممالک کی صف میں شامل ہونےکیلئےآپس میں تعاون بڑھانا ہوگا۔ اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی صدرآصف علی زرداری نےکی جبکہ بلاول بھٹوزرداری اوروزیرخارجہ حناربانی کھربھی اجلاس میں شریک ہوئے۔