عالم اسلام کی نامور علمی شخصیت مولانا محمدسالم قاسمی انتقال کرگئے

15 اپریل 2018

اسلام آباد(صباح نیوز)عالم اسلام کی نامور شخصیت خطیب اسلام مولانا محمد سالم قاسمی انتقال کر گئے،مولانا قاسمی کی رحلت پر پورا عالم اسلام سوگوار،وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے قائدین کی طرف سے مولانامرحوم کی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین اور ان کے لواحقین سے اظہار تعزیت تفصیلات کے مطابق عالم اسلام کی نامور علمی شخصیت مولانا محمدسالم قاسمی طویل علالت کے بعدانتقال فرما گئے-آپ دارالعلوم دیوبند وقف کے بانی ومہتمم،آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے نائب صدر تھے،مولانا سالم قاسمی حکیم الاسلام مولانا محمد طیب قاسمی کے جانشین اور حکیم الامت مولانا محمد اشرف علی تھانوی کے آخری شاگرد رشید تھے،انہوں نے 1968 میں سند فراغت حاصل کی اور دارالعلوم دیوبند میں تدریسی خدمات سرانجام دینے لگے،1982 میں دارالعلوم دیوبند وقف کی بنیاد رکھی-آپ نے مولانا عبدالقادر رائے پوری اور اپنے والد گرامی سے بیعت ہوکراجازت و خلافت حاصل کی اورہزاروں علما کرام اور متوسلین کی تربیت و رہنمائی فرماتے رہے-آپ کو عرب وعجم اور مشرق و مغرب میں یکساں طور پر قدر و منزلت کی نگاہ سے دیکھا جاتا تھا اوردنیا بھر میں آپ کے تلامذہ کا وسیع حلقہ تھا-آپ ندو العلما،مظاہر العلوم کی مجلس شوری کے رکن مسلم یونیورسٹی علی گڑھ کے کورٹ ممبر ہونے کے ساتھ ساتھ کل ہند رابط المساجد،اسلامک فقہ اکیڈمی انڈیا اورمجلس مشاورت کی سرپرست بھی تھے-مولانا سالم قاسمی کی رحلت پر پورا عالم اسلام سوگوار ہے اور دنیا بھر میں ان کی دینی،ملی اور علمی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے درجات کی بلندی کے لیے دعاوں کا سلسلہ جاری ہے-پاکستان کے دینی مدارس کے سب سے بڑے نیٹ ورک وفاق المدارس العربیہ پاکستان کے صدر مولانا ڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر،مولانا انوار الحق،مولانا مفتی محمد رفیع عثمانی اور مولانا محمد حنیف جالندھری نے مولانا سالم قاسمی کی رحلت کو عالم اسلام کے لیے ناقابل تلافی نقصان قرار دیا اور کہا کہ ان کی وفات سے پیدا ہونے والا خلا صدیوں پر نہیں کیا جا سکے گا-وفاق المدارس کے قائدین نے مولانا سالم قاسمی کے انتقال پر ان کے لواحقین اور دارالعلوم دیوبند کے جملہ وابستگان سے تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دکھ کی اس گھڑی میں پاکستان بھر کے علما و طلبہ اور عوام الناس ان کے دکھ میں برابر کے شریک ہیں۔