سپریم کورٹ : کراچی میں کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر پر پابندی برقرار‘ نالوں کی فوری صفائی کا حکم

15 اپریل 2018

کراچی (وقائع نگار)سپریم کورٹ نے سندھ میں صاف پانی کی فراہمی اور نکاسی آب سے متعلق بارش سے پہلے نالوں کی صفائی مکمل کرنے کا حکم دیتے ہوئے پیش رفت رپورٹ طلب کرلی۔ سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں جسٹس سجاد علی شاہ اور جسٹس فیصل عرب پر مشتمل 2 رکنی بینچ کے روبرو سندھ میں صاف پانی کی فراہمی اور نکاسی آب سے متعلق سماعت ہوئی۔ جسٹس سجاد علی شاہ نے ریمارکس دیئے نالوں کی جلد صفائی نہ ہوئی تو بارش میں شہریوں کو بھگتنا پڑے گا۔ ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل نے بتایا کہ واٹر کمیشن کے حکم پر نالوں کی صفائی ستھرائی سمیت دیگر اقدامات شروع ہوگئے ہیں۔ جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس میں کہا کہ یہی شرمندگی کی بات ہے کہ کام اب شروع ہوا ہے۔ یہ کام آپ کو خود کرنا چاہئے تھا۔ عدالت نے استفسار کیا کہ بارش کا سیزن شروع ہونے والا ہے، نالوں کی صفائی کب مکمل کریں گے؟ جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیئے کہ شہریوں کو صاف پانی ملنا چاہیے، پانی کے بغیر زندگی نہیں ہے۔ چیف جسٹس بھی یہی کہتے ہیں کہ صحت کے سارے مسائل پانی سے وابسطہ ہیں۔ درخواست گزار شہاب اوستو ایڈوکیٹ نے موقف اختیار کیا 4 بڑے نالوں کی صفائی کا کام شروع ہوگیا۔ شہر میں 30 بڑے اور 500 چھوٹے نالے ہیں، خاصا وقت درکار ہوگا۔ نالوں کی صفائی کیلئے سندھ حکومت 500 ملین روپے جاری کررہی ہے۔ ابتدائی طور پر کورنگی، چکرا، محمودآباد اور منظور کالونی کے نالوں کی صفائی ہورہی ہے۔ عدالت نے پیش رفت رپورٹ کیلئے سماعت 5 مئی تک ملتوی کردی۔ دریں اثناءسپریم کورٹ نے کثیرالمنزلہ عمارتوں سے متعلق عدالتی فیصلے کی وضاحت کیلئے دائر درخواست نمٹادی۔ عدالت نے حکم دیا کہ جن علاقوں میں دو منزلہ عمارت یا اس سے زائد پر پابندی ہے وہ برقرار رہے گی۔ جسٹس فیصل عرب نے ریمارکس دیئے اگر پورے شہر میں 6 منزلہ عمارت کی اجازت دے دیں تو شہر جنگل بن جائے گا۔ سپریم کورٹ کراچی میں دو رکنی بنچ کے روبرو کثیرالمنزلہ عمارتوں کی تعمیر سے متعلق عدالتی فیصلے کی وضاحت کیلئے دائر درخواست پر سماعت ہوئی۔ عدالت نے حکم دیا جن علاقوں میں دو منزلہ عمارت یا اس سے زائد پر پابندی ہے وہ برقرار رہے گی۔ 6 منزلہ عمارت کی اجازت کا کوئی غلط مطلب نہ لے۔ ہم نے کوئی قانون نہیں بنایا صرف پابندی لگائی ہے۔ عدالت نے حکم دیا کہ مخصوص رہائشی اور تجارتی علاقوں میں کثیرالمنزلہ عمارتوں پر پابندی برقرار رہے گی۔ عدالت نے کثیرالمنزلہ عمارتوں کی تعمیر سے متعلق عدالتی فیصلے کی وضاحت کیلئے دائر درخواست نمٹادی۔
سپریم کورٹ /کراچی