23 کروڑ کرپشن کا الزام، پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی کے گرفتار سابق چیف فنانس آفیسر اکرام نوید سے تفتیش

15 اپریل 2018

لاہور (نامہ نگار) نیب کی پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی کے گرفتار سابق چیف فنانس آفیسر اکرام نوید سے23 کروڑ روپے سے زائد کی کرپشن کے الزام میں تفتےش جاری ہے ۔ نیب ذرائع کے مطابق پنجاب پاور ڈو یلپمنٹ کمپنی کرپشن کیس میں بڑی اور اہم پیش رفت ہوئی ہے۔ سابق چیف فنانس آفیسر اکرام نوید سے تحقیقات کے دوران اختیارات کے ناجائز استعمال اور ذرائع آمدن سے زائد اثاثہ جات بنانے کے ٹھوس شواہد حاصل ہوئے ہیں۔ ملزم نے دھوکہ دہی اور فراڈ سے نا صرف اپنے بلکہ دیگر عزیز و اقارب کے نام بھی متعدد جائیدادیں بنائیں۔ ملزم اکرام نوید کو پنجاب پاور ڈویلپمنٹ کمپنی کے مالی معاملات کے حوالے سے ماہرانہ رائے فراہم کرنے کی ذمہ داری سونپی گئی تھی، بطور سی ایف او کمپنی کے تمام مالی معاملات کا ریکارڈ اور اکاﺅنٹس کی تفصیلات کے علاوہ اندرونی مالی معاملات کی مکمل ذمہ داری بھی ملزم کی تھی، میسرز کاسمک کنسلٹنسی ایک جعلی فرم تھی جس کا کاغذوں کے علاوہ کوئی وجود نہیں تھا ملزم نے اختیارات کا ناجائز استعمال اور دھوکہ دہی سے میسرز کاسمک کنسلٹنسی کو جعلی ادائیگیاں کیں، ملزم اکرام نوید کے غیر قانونی اقدام حکومتی خزانے کو23 کروڑ 20 لاکھ روپے کے نقصان کا موجب بنے اور یہ رقوم اپنے عزیز کے اکاﺅنٹ میں منتقل کیں۔قومی احتساب بیورو کا کہنا ہے کہ تفتیش کو مزید آگے بڑھانے اور لوٹی گئی رقوم کی واپسی کے لئے ملزم اکرام نوید کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے۔
اکرام نوید/گرفتار