بھارت: انسانیت کو شرما دینے والا ایک اور سانحہ‘ 11سالہ بچی سے زیادتی‘ وحشیانہ تشدد کے بعد قتل

15 اپریل 2018

لاہور (نیوز ڈیسک) بھارتی ریاست گجرات کے شہر سورت میں انسانیت کو شرما دینے والا درندگی کا ایک اور واقعہ سامنے آ گیا۔ شہر کے علاقے بھسیتاں میں کرکٹ گرائونڈ کے قریب سے پولیس نے ایک 11سالہ لڑکی کی نعش برآمد کی جسے کئی روز تک زیادتی اور وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد گلا گھونٹ کر مار دیا گیا۔ لڑکی کی شناخت نہ ہو سکی تاہم سول ہسپتال سورت کے فارترک ہیڈ گنیش گویکر نے بتایا کہ بچی کے جسم پر چھوٹے بڑے 100سے زائد زخم پائے گئے جن میں سے بعض 6سے 7روز پرانے تھے ایسا لگتا ہے کہ بچی کو اغوا کرنے کے بعد کسی جگہ قید رکھ کر 7روز تک وقفہ وقفہ سے وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ بچی کے نازک حصوں پر لکڑی کی شدید ضربات پائی گئیں۔ دوسری طرف اترپردیش کے شہر انائو میں 17سالہ دلت لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنانے اور پولیس حراست میں اسکے باپ کو قتل کرنے والے بی جے پی کے رکن اسمبلی کلدیپ سنگھ سینگر جسے جمعہ کے روز سی بی آئی نے حراست میں لے لیا تھا کا ہفتہ کے روز 7روزہ جسمانی ریمانڈ اپنی متعلقہ عدالت سے حاصل کر لیا۔ سینٹرل بیورو آف انویسٹی گیشن جو وفاقی تفتیشی ادارہ ہے نے 17لڑکی کو چکمہ دیکر کلدیپ سنگھ کے گھر پہنچانے والے کشن سنگھ کو بھی حراست میں لے لیا۔ واضح رہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے ایک ہفتہ قبل ہونیوالے اس سانحہ پر چپ کا روزہ توڑتے ہوئے کہاکہ قوم کی اس بیٹی کو ضرور انصاف ملے گا میں یقین دلاتا ہوں کہ کسی مجرم کو بخشا نہیں جائے گا۔