الیکشن کمشن میں حلقہ بندیوں پر اعتراضات کی سماعت‘ اٹک کے بعض تحفظات مسترد

15 اپریل 2018

اسلام آباد (خصوصی نمائندہ) الیکشن کمیشن نے مختلف اضلاع کی حلقوں بندیوں سے متعلق اپیلوںکا فیصلہ سنا دیا جبکہ الیکشن کمیشن نے پشاور کے حلقوں پر دائر اعتراضات پر فیصلہ موخر کردیا۔ پشاور اور دیگری شہری حلقوں پر دائر اعتراضات کا فیصلہ 17 اپریل کو سنایا جائیگا۔الیکشن کمیشن نے ضلع اٹک کے حلقوں پر دائر اعتراضات پر فیصلہ سنا دیا۔قومی اسمبلی کے حلقوں میں پی سی چھوئی گھڑیالہ ، پی سی سرخ سالار ، پی سی بوٹا کو این اے 56 سے نکال کر این اے 55 میں ڈال دیا گیا۔پی سی کوٹ سونڈکی پی سی پتھر گھڑ اور پی سی حصار کو این اے 55 سے نکال کر این اے 56 میں ڈال دیا گیا۔صوبائی اسمبلی کے حلقوں میں پی سی چھوئی گھڑیالہ ، پی سی بوٹا ، پی سی سرخ سالار کو پی پی 5 سے نکال کر پی پی 1 میں شامل کر دیا گیا۔پی سی بل سیداں اور پی سی تاجا بارا کو پی پی 4 سے نکال کر پی پی 3 میں شامل کر دیا گیا۔ضلع اٹک کے حلقوں پر دائر باقی تمام اعتراضات کو مسترد کر دیا گیا۔الیکشن کمیشن نے ضلع منڈی بہاوالدین کے حلقوں پر دائر اعتراضات پر فیصلہ سنا دیا۔قومی اسمبلی کے حلقوں این اے 86 اور این اے 85 پر دائر تمام اعتراضات مسترد کر دئیے۔صوبائی اسمبلی کے حلقوں میں چلیاں والا کو پی پی 66 سے نکال پی پی 65 میں شامل کر دیا گیا۔پی سی ہردوبوٹھ والا ، پی سی چڑنڈ والا اور ٹاونڈ کمیٹی اولڈ مانگٹھ کو پی پی 65 سے نکال کر پی پی 66 میں شامل کر دیا گیا۔پی سی رکن کو پی پی 68 سے نکال کر پی پی 67 میں شامل کر دیا گیا۔ضلع منڈی بہاوالدین کے حلقوں پر دائر باقی تمام اعتراضات کو مسترد کر دیا گیا۔ انتخابی فہرستوں میں ووٹ کے اندراج،اخراج و درستگی کیلئے 11دن باقی رہ گئے ہیں ۔الیکشن کمیشن کے اعلامیہ کے مطابق ووٹ کے اندراج،اخراج و درستگی کی آخری تاریخ 24اپریل ہے ۔شہری اپنے ووٹ کی معلومات کے لیے قریبی ڈسپلے سینٹر سے رابطہ کریں یا پھر اپنا شناختی کارڈ نمبر 8300 پر ایس ایم ایس کریں ۔ووٹ کے اندراج/منتقلی کیلئے فارم،5اخراج /اعتراض کیلئے فارم16 اور درستگی کوائف کے لیے فارم17 قریبی ڈسپلے سینٹر یا دفتر ضلعی الیکشن کمیشنر میں جمع کرائے جاسکتے ہیں ۔فارم الیکشن کمیشن آف پاکستان کی ویب سائیٹ www.ecp.gov.pkسے ڈان لوڈ کیے جاسکتے ہیں یا قریبی ڈسپلے سینٹر /دفتر ضلعی الیکشن کمیشنر سے بھی حاصل کیے جاسکتے ہیں۔ڈسپلے سینٹر پر فارم جمع کرواتے وقت اپنا اصل شناختی کارڈ ہمرا رکھیں اور اپنے شناختی کارڈ کی کاپی فارم 15 اور فارم 17 کے ساتھ ضرور منسلک کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔