قیام پاکستان تعلیمی انقلاب کا نتیجہ تھا‘آزاد بن حیدر

15 اپریل 2018

کراچی(خصوصی رپورٹر) جناح مسلم لیگ کے چیف آرگنائزر پروفیسر آزاد بن حیدر نے کہا ہے کہ پاکستان کی بنیاد تعلیمی انقلاب تھا‘ جسکے نتیجے میں پاکستان قائم ہوا۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے جناح تعلیمی اسمبلی میں صدارتی خطاب میں کیا۔ انہوں نے مزید کہا اگر تعلیم کو صوبوں میں تقسیم کیاگیا توپاکستان کی وحدت ا ور اکائی خطرے میں پڑ جائے گی۔ پروفیسرانوار احمد زئی(سابق چیئرمین انٹر  میڈیٹ بورڈ) نے کہا کہ تعلیمی پالیسیوں پرعملدرآمد میں حکومتیں ناکام رہی ہیں جو تعلیمی اہداف تھے بوجوہ ان پرعمل نہیں کیا گیا جس کے نتیجے میں شرح خواندگی بڑھنے کے بجائے کم ہورہی ہے۔ پروفیسر ہارون رشید نے کہا کہ پاکستان کے صوبوں میں تعلیم جیسے مسئلے پر وفاق سے کوئی ہم آہنگی نہیں ہے۔ اس کی وجہ سے تعلیم جغرافیائی اکائیوں اور ثقافتوں میں تقسیم ہوگئی ہے۔ علامہ اقبال او رقائد اعظم کے تعلیمی ویژن پر غور نہیں کیا جارہا ہے۔ ڈاکٹر پروفیسرفرحت عظیم نے کہا کہ ہماری نسل تعلیم کی معنویت سے بے خبر ہے۔ ڈگریوں کا حصول تعلیم کا مقصد قراردیا جارہا ہے۔ یاد رہے کہ تعلیمی اسمبلی میں 14 قرار دادیں منظور کی گئیں‘ جو چیف جسٹس ثاقب نثار‘ وزیراعظم پاکستان اور صدر پاکستان کو بھیجی جارہی ہیں۔ تعلیمی اسمبلی سے مقررین میں پروفیسر خواجہ قمرالحسن اور پروفیسر خیال آفاقی نے خطاب کیا۔