شباب ملی کا روڈ کارواں پشاور روانہ، عوام انتخابات میں امریکی غلاموں کو مسترد کر دیں: منور حسن

15 اپریل 2013

 کراچی (نیوز رپورٹر) جماعت اسلامی کے امیر سید منور حسن نے کہا ہے کہ جماعت اسلامی اپنے انتخابی نشان ترازو کے تحت انتخابات میں بھرپور طریقے سے حصہ لے گی‘ انتخابات کا بائیکاٹ دوسرے لوگ کریں گے‘ 11 مئی کو امریکی غلاموں کو مسترد کر کے ہی نجات کی راہ نکل سکتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اتوار کے روز شباب ملی پاکستان کے تحت کراچی تا پشاور ”ترازو روڈ کارواں“ کے آغاز کے موقع پر نوجوانوں سے خطاب اور بعدازاں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ شباب ملی کا روڈ کارواں جو بذریعہ سڑک کراچی سے پشاور تک جائے گا، کارواں کے ساتھ ایک بہت بڑا ترازو کا ماڈل بھی ہوگا جو شباب ملی نے خصوصی طور پر تیار کیا ہے۔ سید منورحسن نے کہاکہ سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا چیپٹر کلوز ہوگیا ہے‘ اسے خیبر پی کے میں جے یوآئی اور تحریک انصاف نے بند کیا اور لاہور میں نواز لیگ نے۔ سندھ اور کراچی میں 10 جماعتی اتحاد تازہ ہوا کا جھونکا ہے اس کے نتیجے میں ون ٹو ون امیدوار کھڑے کرنے میں آسانی پیدا ہوگی۔ انہوں نے کہاکہ جماعت اسلامی امید کی کرن ہے‘ جماعت اسلامی کی طرف سے عوام کلیئر ہیں‘ بڑی پارٹیاں امریکہ کو خوش کرنے میں لگی ہوئی ہیں اور اسی لئے ایسے لوگوں کو ٹکٹ دئےے جا رہے ہیں کہ امریکی غلاموں کو منتخب کرایا جا سکے۔ انتخابات میں جھرلو اور دھاندلی کی تیاریاں ہورہی ہیں لیکن ضرورت اس بات کی ہے کہ عوام امریکہ کے غلاموں کو مسترد کردیں تب ہی عوام کو نجات مل سکتی ہے۔ سید منورحسن نے کہا کہ آج ملک میں چاروں طرف امریکی سائے منڈلارہے ہیں۔ معاشی اور عسکری دائروں میں امریکی غلامی کے اثرات موجود ہےں۔ حکمرانوں کو اقتدار تک پہنچانے کےلئے امریکی غلامی کا سہارا لیا جاتا ہے۔ شباب ملی عزم و عہد ہے اور یہ ساری تیاریاں اس نیک مقصد کےلئے ہو رہی ہیں کہ کروڑوں فرزندان اسلام کو ملک کے گوشے گوشے میں امریکی غلامی سے آگاہ کیا جائے اور اس سے آزادی کےلئے تیاری کی جائے اس لئے ضروری ہے کہ ووٹ کا استعمال شریعت کے مطابق کیا جائے۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں سیکڑوں ریمنڈ ڈیوس موجود ہیں جو یہاں کے نوجوانوں کو قتل کررہے ہیں۔ عوام کو فرقوں اور مسلکوں کی تقسیم سے دوچار کررہے ہیں۔ امریکی سازشیں عالم اسلام کے خلاف ہیں جو ہمارے ملک ہی میں نہیں کشمیر‘ فلسطین‘ افغانستان‘ عراق ‘ چیچنیا ہر جگہ نظر آرہی ہےں۔ ہمیں ان کو سمجھنا ہوگا‘ عوام کو ان خطرات سے آگاہ کرنا ہوگا اور اس کا مقابلہ کرنے کےلئے تیار ہونا ہوگا۔ سید منور حسن نے کہاکہ کراچی پر اپنے حق کے دعویداروں نے کراچی کو مقتل، دہشت گردی اور بھتہ خوری کی علامت بنا دیا ہے۔